با اصول علم الہی کیا ہے؟



سوال: با اصول علم الہی کیا ہے؟

جواب:
"با اصول" اس بات کی طرف حوالہ دیتاہے جو کسی بات کوایک نظام یا سلسلہ میں ڈالا جاتا ہے۔اس لغے با اصول علم الہی کچھ اصولوں یا نظاموں میں تقسیم شدہ ہیں جو کہ اس کے مختلف موضوعات کی بابت سمجھاتے ہیں۔ مثال کے طور پر بائبل کی کئی ایک کتابیں فرشتوں کی بابت اطلاع دیتے ہیں۔یہ یاد رکھنا ضروری ہے کہ 66 کتابوں میں سے کوئی بھی ایک کتاب فرشتوں کی بابت مکمل جانکاری یا اطلاع نہیں دیتی۔با اصول یا با قاعدہ علم الہی فرشتوں سے متعلق بائبل کی ان تمام کتابوں میں پائے جانے والی تمام اطلاعات کو لیتی ہے اور انہیں ایک نظام کے تحت مرتب کرکے انہیں منتظم کیا جاتا ہے۔ جسے علم الملائکہ کہتے ہیں۔ یہی ہے با اصول علم الہی ہے — کلام پاک کی تعلیم کو الگ الگ مضمون کے تحت تقسیم کر کے اس کے تمام حوالہ جات کے ساتھ شرح پیش کرنے کو با اصول علم الہی کہتے ہیں۔

مخصوص علم الہی پیٹرالوجی یہ پدرانہ علم الہی ہے۔ یہ خدا باپ سے متعلق مطالعہ ہے۔ کرسٹالوجی۔ یہ خدا بیٹے سے متعلق، یعنی خداوند یسوع مسیح سے متعلق مطالعہ ہے۔ نیومیٹا لوجی (علم الروح) روح القدس سے متعلق مطالعہ ہے۔ ببلیا لوجی یہ بائبل سے متعلق مطالعہ ہے۔ سوٹیریالوجی یہ نجات سے متعلق مطالعہ ہے۔ اکلیسیا لوجی یہ چرچ سےمتعلق مطالعہ ہے۔ اسکیٹالوجی یہ آخری زمانہ سے متعلق مطالعہ ہے۔ اینجلا لوجی یہ فرشتوں سےمتعلق مطالعہ ہے۔ کرسچین ڈیمونالوجی۔ یہ مسیحی ظاہری تناسب سے عفریت (بھوت پریت) سے متعلق مطالعہ ہے۔ کرسچین اینتھروپالوجی یہ بھی مسیحی ظاہری تناسب سے انسانیت سے متعلق مطالعہ ہے۔ ہرمیٹیالوجی یہ گناہ سے متعلق مطالعہ ہے۔ اسطرح سے کئی ایک مطالعے ہیں جو بائبل کے مضامین کو سمجھنے میں مدد کرتی ہیں۔ با اصول علم الہی ایک ضروری اوزار بطور ہے جو بائبل کو ایک تنظیم بطور سکھانے اور سمجھنے میں ہماری مدد کرتا ہے۔

با اصول علم الہی کے علاوہ کچھ اور بھی طریقے ہیں جن سے علم الہی کو تقسیم کیا جا سکتا ہے۔ بائبل کی علم الہی بائبل کی کسی ایک کتاب (یا کتابوں) کا مطالعہ ہے اور یہ علم الہی کے مختلف پہلوؤں کی اہمیت کونمایاںکرتا ہے جس پر خاص طور پر نقطء نظر (فوکس) کیا جاتاہے۔ مثال کے طور پر یوحناکی انجیل جس میں بہت زیادہ مسیح کے بارے میں بیان کیا گیا ہے اور خاص طور سے مسیح کی الوہیت کی بابت دھیان کراتی ہے (یوحنا 14، 1:1؛ 8:58؛ 10:30؛ 20:28)۔تاریخی علم الہی یہ اصولوں کی بابت مطالعہ ہے جو خاص طور سے میسحی طبقوں میں ان کی کلیسیاؤں میں ان اصولوں کو تنظیم کیاگیا ہے۔ مثال کےطور پر کیلون کے مطابق الہی علم کااصول اور نظام فطرت کی علم الہی کااصول اور معاصر علم الہی کا اصول۔ یہ سارے اصولوں کے مطالعے ہیں جو حال کے دنوں میں ابھر کر آئی ہیں اور اس پر دھیان کیا جارہا ہے۔ علم الہی کا مطالعہ چاہے کسی بھی طریقہ سے کیا گیا ہو اس میں ضروری بات یہ ہے کہ ہر حالت میں کسی بھی قیمت پر علم الہی کامطالعہ کیا جانا چاہئے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



با اصول علم الہی کیا ہے؟