اتنے زیادہ مذاہب کیوں ہیں؟ کیا تمام مذاہب خُدا کے پاس لاتے ہیں؟



سوال: اتنے زیادہ مذاہب کیوں ہیں؟ کیا تمام مذاہب خُدا کے پاس لاتے ہیں؟

جواب:
بہت سے مذاہب کا وجود اور یہ دعویٰ کہ تمام مذاہب خُدا تک پہنچاتے ہیں بغیر تامل کے، بہت سے لوگوں کے لئے اُلجھن کا باعث بنتے ہیں ،جو خُدا کے بارے میں سچائی کی سنجیدگی سے تلاش کر رہے ہیں، اِس حتمی نتیجہ کے ساتھ،بعض اوقات اِس موضوع کی کامل سچائی تک پہنچنے کی جستجو میں کچھ لوگ نا اُمید ہو جاتے ہیں۔ یا وہ عالمگیرنجات کے عقیدے کے ماننےوالوں (یونیورسل اِسٹ) کے دعوئے کو قبول کرتے ہوئے اپنی جستجو کو ختم کر دیتے ہیں کہ تمام مذاہب خُدا تک پہنچاتے ہیں۔ بے شک، متشککین(سکیپٹِک) بھی ثبوت کے طور پر بہت سے مذاہب کے وجود کی طرف اشارہ دیتے ہیں کہ یا تو آپ خُدا کو جان نہیں سکتے یا پھر خُدا ہے ہی نہیں۔

رومیوں پہلا باب آیات 19 تا 21 میں بائبل کی وضاحت پائی جاتی ہے کہ بہت سے مذاہب کیوں ہیں۔ کیونکہ جو سچائی خُدا کی بارے معلوم ہو سکتی ہے وہ انسان کے باطن میں ظاہر ہے، اِس لئے کہ خُدا نے اپنے آپ کو اُن پر ظاہر کر دیا ہے۔ خُدا کے بارےمیں سچائی کوقبول کرنے اور اُس کے تابع ہونے کی بجائے ، زیادہ تر انسان اُسے ردّ کرتے ہیں اور خُدا کو سمجھنے کے لئے اپنے ہی راستے تلاش کرتے ہیں۔ لیکن یہ خُدا تک نہیں لاتے ، بلکہ یہ سوچ کی لاحاصلی ہے۔ یہاں ہم "بہت سے مذاہب" کی بنیاد تلاش کرتے ہیں۔

بہت سے لوگ ایسے خُدا پر ایمان نہیں لانا چاہتے جو راستبازی اور اخلاقیات کا مطالبہ کرتا ہے، لہذہ وہ ایسا خُدا ایجاد کرتے ہیں جو ایسے مطالبات نہیں کرتا۔ بہت سے لوگ ایسے خُدا پر ایمان لانا نہیں چاہتے جو لوگوں کے لئے اعلان کرتا ہے کہ وہ اپنے راستوں پر چلتے ہوئے فردوس حاصل نہیں کر سکتے۔ لہذہ وہ ایسا خُدا ایجاد کر لیتے ہیں جو لوگوں کو کم از کم اُنکی اپنی صلاحیت کے وسیلہ سے بعض اقدامات کو پورا کرنے، بعض اصولوں کی پیروی کرنے، اور/یا کچھ قوانین کی فرمانبرداری کرنے سےفردوس میں قبول کرتا ہو۔ بہت سے لوگ ایسے خُدا کے ساتھ تعلق قائم نہیں کرنا چاہتے جو حاکم اعلیٰ اور قادرِ مطلق ہے۔ لہذہ، وہ ایک شخصی خُدا اور حکمران کے مقابلے میں خُدا کو ایک پوشیدہ قوت تصور کرتے ہیں۔

بہت سے مذاہب کا وجود خُدا کے وجود کے خلاف ایک دلیل نہیں ہے ، اور یہ بھی دلیل نہیں ہے کہ خُدا کے بارے میں سچائی غیر واضح ہے۔ بلکہ بہت سے مذاہب کا وجود اِس بات کا ثبوت ہے کہ انسان واحد حقیقی خُدا کو ردّ کرتا ہے۔ انسان نے حقیقی خُدا کو ایسے دیوتاؤں کے ساتھ بدل دیا ہے جو اُن کے پسند کے مطابق ہیں۔ یہ ایک خطرناک مہم پسندی ہے۔ خُدا کو اپنی صورت پر ڈھالنے کی خواہش ہمارے اندر پائے جانے والے گناہ کی فطرت کی وجہ سے ہے ، ایسی فطرت جو آخر میں "ہلاکت کی فصل" کاٹے گی (گلتیوں باب 6 آیات 7 تا8)۔

کیا تمام مذاہب خُدا کے پاس لاتے ہیں؟ نہیں۔ تمام مذہبی یا غیر مذہبی لوگ کسی دن خُدا کے سامنے کھڑے ہوں گے (عبرانیوں باب 9 آیت 27)، لیکن مذہبی تعلق آپ کی ابدی منزل کا تعین نہیں کرتا۔ صرف یسوع مسیح پر ایمان ہی بچائے گا۔ "جِس کے پاس بیٹا ہے اُس کے پاس زندگی ہے اور جِس کے پاس خُدا کا بیٹا نہیں اُس کے پاس زندگی بھی نہیں"یہ اتنا آسان ہے۔ صرف مسیحیت یعنی یسوع مسیح کی موت اور قیامت پر ایمان ہی خُدا کی معافی اور ابدی زندگی دِلاتا ہے۔ کوئی شخص بیٹے کے وسیلہ کے بغیر باپ کے پاس نہیں آتا (یوحنا باب 14 آیت 6)۔ اِس سے فرق پڑتا ہے کہ آپ کیا ایمان رکھتے ہیں۔ یسوع مسیح کے بارے میں سچائی کو قبول کرنے کا فیصلہ اہم ہے۔ غلط لوگوں کے لئے ابدیت نہایت طویل عرصہ ہے۔

English



اردو ہوم پیج میں واپسی



اتنے زیادہ مذاہب کیوں ہیں؟ کیا تمام مذاہب خُدا کے پاس لاتے ہیں؟