کیا ہم سب نے آدم اور حوا سے گناہ میراث میں پایا؟



سوال: کیا ہم سب نے آدم اور حوا سے گناہ میراث میں پایا؟

جواب:
جی ہاں، تمام لوگوں نے آدم اور حوا خاص طور پر آدم سے گناہ وراثت میں پایا۔ بائبل میں گناہ کو خُدا کی شریعت کی مخالفت (1 یوحنا باب 3آیت 4) اور خُدا کے خلاف بغاوت کے طور پر بیان کیا گیا ہے (اِستثنا باب 9 آیت 7، یشوع باب 1 آیت 18)۔ پیدائش تیسرا باب خُدا اور اُسکے حکم کے خلاف آدم اور حوا کی بغاوت کو بیان کرتا ہے۔ آدم اور حوا کی نافرمانی کی وجہ سے گناہ اُن کی تمام نسلوں کےلئے "میراث " بن گیا۔ رومیوں باب 5 آیت 12 ہمیں بتاتی ہے کہ ایک آدمی آدم کے سبب سے گناہ دُنیا میں آیا اور گناہ کے سبب سے موت آئی اور یُوں موت سب آدمیوں میں پھیل گئی اِس لئے کہ سب نے گناہ کیا۔ یہ مردہ گناہ موروثی گناہ کے طور پر جانا جاتا ہے۔ جیسے ہم اپنے والدین سے جسمانی خصوصیات وراثت میں پاتے ہیں، ویسے ہی ہم اپنی گناہ آلودہ فطرت آدم سے وراثت میں حاصل کرتے ہیں۔

آدم اور حوا کو خُدا کی صورت و شبیہ پر بنایا گیا تھا (پیدائش پہلا باب آیات 26 تا 27 اور باب 9 آیت 6)۔ تاہم، ہم بھی آدم کی صورت اور اُس کی شبیہ پر ہیں (پیدائش باب 5 آیت 3)۔ جب آدم گناہ میں گرا، تو نتیجہ یہ نکلا کہ اُس کی نسل کا ہر شخص بھی گناہ سے "مثاثر" ہوا۔ داؤد اپنے مزامیر میں سے ایک میں اِس حقیقت پر نوحہ کرتا ہے، "دیکھ! میں نے بدی میں صُورت پکڑی اور میں گناہ کی حالت میں ماں کے پیٹ میں پڑا" (زبور 51 آیت 5)۔ اِس کا یہ مطلب نہیں کہ اُس کی ماں نے اُس کو ناجائز اولاد کے طور پر پیدا کیا تھا، بلکہ اُس کی ماں نے اپنے والدین سے گناہ کی فطرت کو وراثت میں حاصل کیا، اور اُنہوں نے اپنے والدین سے۔ داؤد نے اپنے والدین سے گناہ وراثت میں پایا، جیسے ہم سب اپنے والدین سے پاتے ہیں۔ یہاں تک کہ اگر ہم بہترین ممکن زندگی گزارتے ہیں، تو بھی موروثی گناہ کے نتیجہ کے طور پر گنہگار ہی ہیں ۔

گنہگار پیدا ہونے کے درحقیقت نتائج یہ ہیں کہ ہم سب گناہ کرتے ہیں۔ رومیوں باب 5 آیت 12 میں ارتقا پر غور کریں: گناہ آدم کے سبب سے دُنیا میں داخل ہوا، اور گناہ کے نتیجہ میں موت پیدا ہوئی، اور موت سب آدمیوں میں پھیل گئی، سب لوگ گناہ کرتے ہیں کیونکہ وہ آدم سے گناہ وراثت میں پاتے ہیں۔ کیونکہ "سب نے گناہ کیا اور خُدا کے جلال سے محروم ہیں" (رومیوں باب 3 آیت 23)، ہمیں اپنے گناہ دھونے کے لئے ایک کامل اور بے گناہ قربانی کی ضرورت ہے، اور یہ کام ہم خود سے کرنے سے قاصر ہیں۔ شگر ہے، یسوع مسیح گناہ سے نجات دیتا ہے! ہمارے گناہ کو یسوع کی صلیب پر مصلوب کر دیا گیا ہے، اور اب "ہم کو اُس میں اُس کے خون کے وسیلہ سے مخلصی یعنی قصوروں کی معافی اُس کے اُس فضل کی دولت کے موافق حاصل ہے" (افسیوں پہلا باب آیت 7)۔ خُدا نے اپنی لامحدود حکمت میں گناہ کے لئے علاج مہیا کر دیا ہے جو ہم میراث میں پاتے ہیں، اور یہ علاج ہر ایک کے لئے میسر ہے، "پس اے بھائیو! تمہیں معلوم ہو کہ اُسی کے وسیلہ سے تم کو گناہوں کی معافی کی خبر دی جاتی ہے" (اعمال باب 13 آیت 38)۔

English



اردو ہوم پیج میں واپسی



کیا ہم سب نے آدم اور حوا سے گناہ میراث میں پایا؟