کیا سائنٹولوجی مسیحی ہے یا ایک بدعت ہے؟



سوال: کیا سائنٹولوجی مسیحی ہے یا ایک بدعت ہے؟

جواب:
خلاصہ کرنے کے لئے سائنٹولوجی ایک مشکل مذہب ہے۔ سائنٹولوجی کی بنیاد 1953 میں ایک سائنس فِکشن مصنف ایل رون ہبرڈ نے رکھی، اور اِس نے بعض ہالی وُڈ مشہور شخصیات کی وجہ سے جنہوں نے اِسے قبول کیا ہے کافی مقبولیت حاصل کر لی ہے۔ سائنٹولوجی کی تخلیق کرنے کے نتیجہ میں ہبرڈ ایک کروڑ پتی (ملٹی ملین ائر) شخص بن گیا ہے۔ حقیقت میں سائنٹولوجی کے سب سےزیادہ عام اعتراضات میں سے ایک یہ ہے کہ یہ ایک پیسے بنانے کی پچیدہ منصوبہ بندی سے زیادہ کچھ نہیں ہے۔ ایل۔اے۔ٹائمز نے رپورٹ کیا ہے کہ ہبرڈ کی تنظیم کی مالی پالیسی، ہبرڈ کے اپنے الفاظ میں یہ تھی، "پیسہ کمائیں، مزید پیسہ کمائیں، دوسروں کو بھی پیسہ کمانے کے قابل بنائیں" (جوئیل سیپل اینڈ رابرٹ ڈبلیو۔ویلکوس۔ "دا سائنٹولوجی سٹوری، پارٹ 2: دا سیلنگ آف دا چرچ"۔ ایل۔اے۔ٹائمز ڈاٹ منڈے، 6/25/1990، صفحہ اے1:1۔ لاس انجلیس ٹائمز ڈاٹ ویب ڈاٹ 11/23/2015)۔

سائنٹولوجی سکھاتی ہے کہ انسان اصل میں غیر فانی ہے (جِسے تھیٹن کہا جاتا ہے) اِس سیارے سے نہیں، اور انسان مادہ (میَٹر)، قوت (انرجی)، فضا (سپیس)، اور وقت (ٹائم) میں جکڑا ہوا ہے (ایم۔ای۔ایس۔ٹی)۔ سائنٹولوجِسٹ (سائنٹولوجی کے ماننے والوں) کے لئے نجات ایک ایسے عمل سے آتی ہے جِسے "آڈیٹنگ" کہا جاتا ہے، جِس کے ذریعے "نشانِ حافظہ" (بنیادی طور پر، ماضی کے درد کی یادیں اور لاشعوری (بے خبری) جو توانائی کے عصبی دباؤ کو پیدا کرتی ہے) کو ہٹا دیا جاتا ہے۔ آڈیٹنگ (جانچ پڑتال) ایک طویل عمل ہے اور لاکھوں ڈالرز خرچ کر سکتا ہے۔جب حافظہ کے تمام نشانات کو مٹا دیا جاتا ہے، تو تھیٹن ایم۔ای۔ایس۔ٹی سے کنڑول ہونے کی بجائے ایک بار پھر اِسے کنڑول کر سکتا ہے۔ نجات تک ہر تھیٹن کا مسلسل تجسم نو (بار بار پیدا ہونا)ہوتا ہے۔

سائنٹولوجی پیروی کے لئے بہت مہنگا مذہب ہے۔ سائنٹولوجی کے ہر پہلو کی کچھ نہ کچھ فیس ہے، اِس وجہ سے سائنٹولوجی کے "گرجا گھر "صرف اُمیر لوگوں سے بھرے ہیں۔ یہ بہت سخت مذہب اور اُن لوگوں کے خلاف بہت عقوبتی (سزا دینے والا) بھی ہے جو اِس کی تعلیمات اور رُکنیت سے پیچھے ہٹنے کی کوشش کرتے ہیں۔ اِن کے "مقدس صحیفے" صرف ایل۔رون۔ہبرڈ کی تعلیمات اور تحریرات تک محدود ہیں۔

اگرچہ سائنٹولوجِسٹ (سائنٹولوجی کو ماننے والے) دعویٰ کرتے ہیں کہ سائنٹولوجی مسیحیت کے ساتھ مطابقت رکھتی ہے، لیکن حقیقت میں بائبل اُن کے ہر عقیدے کی مخالفت کرتی ہے۔ بائبل سکھاتی ہے کہ خُدا کائنات کا حاکم اور واحد خالق ہے (پیدائش پہلا باب پہلی آیت)، انسان کو خُدا نے خلق کیا ہے (پیدائش پہلا باب آیت 27)، انسان کےلئے نجات صرف فضل سے اور یسوع مسیح کے مکمل کام پر ایمان لانے کے وسیلہ سے دستیاب ہے (فلپیوں دوسرا باب آیت 8)، نجات مفت بخشش ہے اور انسان اِسے کمانے کے لئے کچھ نہیں کر سکتا (افسیوں باب 2آیات 8تا9)، یسوع مسیح زندہ ہے اور خُدا کی دہنی طرف بیٹھا ہے (اعمال باب 2 آیت 33؛ افسیوں پہلا باب آیت 20؛ عبرانیوں پہلا باب آیت 3)، اور اُس وقت کا انتظار کر رہا ہے جب وہ اپنے لوگوں کو اپنے پاس اکٹھا کرے گا تاکہ وہ فردوس میں اُس کے ساتھ ابد تک رہیں۔ اِس کے علاوہ ہر کوئی حقیقی جہنم میں ڈال دیا جائے گا، جہاں وہ ہمیشہ کے لئے خُدا سے الگ رہے گے(مکاشفہ باب 20 آیت 15)۔

سائنٹولوجی قطعی طور پر بائبل کے خُدا ، فردوس، اور جہنم کے وجود کا انکار کرتی ہے۔ سائنٹولوجی کے ماننے والوں کے لئے یسوع مسیح صرف ایک اچھا اُستاد تھا جو بدقسمتی سے اور غلط طور سے مارا گیا۔ سائنٹولوجی ہر اہم تعلیمی نقطہ پر بائبل کی مسیحیت سے مختلف ہے۔ اہم ترین اختلافات میں سے بعض کا خلاصہ مندرجہ ذیل ہے۔

خُدا: سائنٹولوجی ایمان رکھتی ہے کہ کثیر خُدا ہیں اور بعض خُدا دوسروں سے افضل ہیں۔ دوسری جانب، بائبل کی مسیحیت ایک اور صرف ایک خُدا کو مانتی ہےجِس نے اپنے آپ کو ہم پر بائبل اور یسوع مسیح کے وسیلہ سے ظاہر کیا۔ جتنے اُس پر ایمان رکھتے ہیں وہ خُدا کے بارے میں اُن غلط نظریات کو قبول نہیں کر سکتے جو سائنٹولوجی میں سکھائے جاتے ہیں۔

یسوع مسیح: دوسری بدعات کی طرح سائنٹولوجی بھی مسیح کی الُوہیت کا انکار کرتی ہے۔ بائبل کا نظریہ رکھنے کی بجائے کہ مسیح کون ہے اور اُس نے کیا کِیا ہے ، وہ کسی کمتر خُدا کی خصوصیات کو یسوع سے منسوب کرتے ہیں جس نے کئی سالوں میں افسانوی رُتبہ حاصل کیا ہے۔ بائبل واضح طور پر سکھاتی ہے کہ یسوع جسم میں خُدا تھا اور اپنے تجسم کے وسیلہ سے وہ ہمارے گناہوں کے لئے قربانی کے طور پر کام کر سکتا تھا۔ یہ یسوع کی موت اور قیامت ہی ہے جِس کے وسیلہ سے ہم خُدا کے ساتھ ابدی زندگی کی اُمید رکھ سکتے ہیں (یوحنا باب 3 آیت 16)۔

گناہ: سائنٹولوجی انسان کی جبلی نیکی پر ایمان رکھتی ہے اور سکھاتی ہے کہ انسان کو یہ بتانا کہ وہ گنہگار ہے اور اُسے توبہ کرنی چاہیے قابلِ نفرت اور انسان کی بالکل خلافِ شان تذلیل ہے ۔ دوسری جانب بائبل سکھاتی ہے کہ انسان گنہگار ہے اور اُس کے لئےواحد اُمید یہی ہے کہ وہ یسوع مسیح کو اپنے خُداوند اور نجات دہندہ کے طور پر قبول کرے (رومیوں باب 6 آیت 23)۔

نجات: سائنٹولوجی تجسمِ نو (دوبارہ پیدا ہونے) پر ایمان رکھتی ہے اور سکھاتی ہے کہ انسان کی شخصی نجات زندگی بھر میں تجسمِ نو سے مربوط پیدائش اور موت کی گردش سے آزادی ہے۔ وہ ایمان رکھتے ہیں کہ تمام عقائد کے مذہبی عمل حکمت، فہم، اور نجات کے لئے عالمی راستہ ہے۔ اِس کے برعکس، بائبل سکھاتی ہے کہ نجات کا صرف ایک ہی راستہ ہے اور یہ یسوع مسیح ہے۔ یسوع نے خود فرمایا، " راہ اور حق اور زندگی میں ہوں، کوئی میرے وسیلہ کے بغیر باپ کے پاس نہیں آتا" (یوحنا باب 14 آیت 6)۔

سائنٹولوجی کی تعلیمات کا بائبل کے ساتھ موازنہ کرتے ہوئے، ہم دیکھتے ہیں کہ دونوں کے درمیان کچھ مشترک ہے بھی تو بہت کم ہے۔ سائنٹولوجی صرف خُدا اور ابدی زندگی سے دور کرتی ہے۔ سائنٹولوجی اگرچہ بعض اوقات مسیحی شاندار زُبان میں اپنے عقائد کا بھیس بدلتی ہے، لیکن حقیقت میں، ہر بنیادی عقیدہ پر مسیحیت کی کُلی طور پر مخالفت کرتی ہے۔ سائنٹولوجی واضح طور پر، اورنہایت یقینی طور پر ، مسیحیت نہیں ہے۔

English



اردو ہوم پیج میں واپسی



کیا سائنٹولوجی مسیحی ہے یا ایک بدعت ہے؟