بخاندان میں شوہر اور بیوی کے کیا فرائض ہیں؟


سوال: بخاندان میں شوہر اور بیوی کے کیا فرائض ہیں؟

جواب:
اگرچہ مرد اور عورت مسیح کے ساتھ تعلقات میں برابر ہیں، لیکن کتابِ مقدس شادی شُدہ زندگی میں ہر ایک کے مخصوص فرائض فراہم کرتی ہے۔ شوہر گھر کی قیادت کا ذمہ لیتا ہے (پہلا کرنتھیوں باب 11 آیت 3؛ افسیوں باب 5 آیت 23)۔ یہ قیادت آمرانہ، منکسرمزاج ، مربیانہ نہیں ہونی چاہیے، بلکہ کلیسیا کی قیادت میں مسیح کی مثال کے مطابق ہونی چاہیے، "اے شوہرو! اپنی بیویوں سے محبت رکھو جیسے مسیح نے بھی محبت کر کے اپنے آپ کو اُس کے واسطے موت کے حوالہ کر دیا۔ تاکہ اُس کو کلام کے ساتھ پانی سے غُسل دے کر اور صاف کر کے مُقدس بنائے" (افسیوں باب 5 آیات 25تا 26)۔ مسیح نے کلیسیا (اپنے لوگوں)سے ترس، رحم، معافی، احترام، اور بے غرضی کے ساتھ محبت کی۔ اِسی طرح شوہروں کوبھی اپنی بیویوں سے محبت کرنی ہے۔

بیویوں کو اپنے شوہروں کے اختیار کے تابع ہونا ہے۔ "اے بیویو! اپنے شوہروں کی ایسی تابع رہو جیسے خُداوند کی۔ کیونکہ شوہر بیوی کا سر ہے جیسے کہ مسیح کلیسیا کا سر ہے اور وہ خود بدن کا بچانے والا ہے۔ لیکن جیسے کلیسیا مسیح کے تابع ہے ویسے ہی بیویاں بھی ہر بات میں اپنے شوہروں کے تابع ہوں"(افسیوں باب 5 آیات 22 تا 24)۔ اگرچہ بیویوں کو اپنے شوہروں کی تابع ہونا چاہیے، بائبل کئی بار مردوں کو بھی بتاتی ہے کہ اُنہیں اپنی بیویوں کے ساتھ کیسا سلوک کرنا چاہیے۔ شوہر کو آمر کا کردار ادا نہیں کرنا چاہیے، بلکہ اپنی بیوی اور اُس کی رائے کا احترام کرنا چاہیے۔ درحقیقت، افسیوں باب 5 آیات 28تا29 مردوں کو اپنی بیویوں سے اُسی طرح محبت کرنے کی نصیحت کرتی ہے جیسے وہ اپنے جسموں کو پالتے اور پرورش کرتے ہوئے اُن سے محبت کرتے ہیں۔ مرد کی اپنی بیوی کے لئے محبت ویسی ہی ہونی چاہیے جیسے مسیح کی محبت اُس کے بدن کلیسیا کے لئے ہے۔

"اے بیویو! جیسا خُداوند میں مُناسب ہے اپنے شوہروں کے تابع رہو۔ اے شوہرو! اپنی بیویوں سے محبت رکھو اور اُن سے تلخ مزاجی نہ کرو"(کُلسیوں باب 3 آیات 18 تا 19)۔ "اے شوہرو! تُم بھی بیویوں کے ساتھ عقل مندی سے بسر کرو اور عورت کو نازک ظرف جان کر اُس کی عزت کرو اور یُوں سمجھو کہ ہم دونوں زندگی کی نعمت کے وارث ہیں تاکہ تُمہاری دُعائیں رُک نہ جائیں"(پہلا پطرس باب 3 آیت 7)۔ اِن آیات سے ہم دیکھتے ہیں کہ محبت اور احترام شوہروں اور بیویوں دونوں کے کردار کی خصوصیات بیان کرتے ہیں۔ اگر یہ دونوں موجود ہیں، تو پھر اختیار، قیادت، محبت، اور تابعداری سے کسی بھی شریکِ حیات کو کوئی مسلہ نہیں ہو گا۔

گھر میں ذمہ داریوں کی تقسیم کے بارے میں، بائبل شوہروں کو اپنے خاندان کی ضروریات پوری کرنے کی ہدایت کرتی ہے۔ اِس کا مطلب ہے کہ وہ کام کرتا اور اپنی بیوی اور بچوں کے لئے زندگی کی تمام ضروریات کو مناسب طور پر پورا کرنے کے لئے بھرپور روپے کماتا ہے۔ ایسا کرنے میں ناکام ہونے کے واضح روحانی نتائج ہیں۔ "اگر کوئی اپنوں اور خاص کر اپنے گھرانے کی خبرگیری نہ کرے تو ایمان کا مُنکر اور بے ایمان سے بدتر ہے" (پہلا تھِمُتھِیُس باب 5 آیت 8)۔ لہذہ جو شخص اپنے گھرانے کی ضروریات کو پورا کرنے کی کوشش نہیں کرتا وہ صیحح طور پر اپنے آپ کو مسیحی نہیں کہہ سکتا۔ اِس کا یہ مطلب نہیں ہے کہ بیوی خاندان کی کفالت میں مدد فراہم نہیں کر سکتی، امثال باب 31 بیان کرتا ہے کہ ایک خُدا ترس بیوی ایسا کر سکتی ہے، لیکن گھرانے کی ضروریات کو پورا کرنا بنیادی طور پر اُس کی ذمہ داری نہیں ہے، یہ اُس کے شوہر کی ذمہ داری ہے۔ اگرچہ شوہر کو بچوں اور گھریلو کاموں میں مدد کرنی چاہیے (اسی طرح اُس کو اپنی بیوی سے محبت کرنے کا فرض پورا کرنا چاہیے)، لیکن امثال باب 31 یہ بھی واضح کرتا ہے کہ گھر عورتوں کے اثر ورسوخ اور ذمہ داریوں کی بنیادی جگہ ہے۔ یہاں تک کہ اگر وہ دیر تک جاگتی اور جلدی اُٹھ جاتی ہے، اُس کے گھرانے کی اچھی دیکھ بھال کی جاتی ہے۔ یہ بہت سی عورتوں کے لئے ایک آسان طرزِ زندگی نہیں ہے، خاص طور پر دولت مند مغربی ممالک میں۔ تاہم بہت سی عورتوں پر دباؤ ڈالا جاتا ہے، اور یہ دباؤ نقطہ شکستگی تک پھیل جاتا ہے۔ ایسے دباؤ کو روکنے کے لئے شوہر اور بیوی دونوں کو دُعا کے ساتھ اپنی ترجیحات کو دوبارہ ترتیب دینی چاہیے اور اپنے فرائض کے متعلق بائبل کی ہدایات کی پیروی کرنی چاہیے۔

شادی میں محنت مشقت کی تقسیم کے بارے میں تنازعات پائے جاتے ہیں، لیکن اگر دونوں ساتھی مسیح کے تابع ہوتے ہیں، یہ تنازعات کم سے کم ہو جائیں گے۔ اگر کوئی جوڑا اِس مسلے پر دلائل حاصل کرتا ہے جو متعدد اور جذباتی ہوں ، یا دلائل سے لگتا ہو کہ یہ شادی کی خصوصیات بیان کر رہے ہیں، تو مسلہ روحانی ہے۔ ایسے واقعہ میں میاں بیوی کو چاہیے کہ وہ اپنے آپ کو سب سے پہلے دُعا اور مسیح کی تابعداری سے وابستہ کریں، پھر محبت اور احترام کے رویہ میں ایک دوسرے کے حوالے کریں۔

English
اردو ہوم پیج میں واپسی
بخاندان میں شوہر اور بیوی کے کیا فرائض ہیں؟