ریفامڈ تھیالوجی کیا ہے؟



سوال: ریفامڈ تھیالوجی کیا ہے؟

جواب:
وسیع نظر سے بات کرتے ہوئے، ریفامڈ تھیالوجی میں عقائد کا کوئی بھی نظام شامل ہے جس کی جڑیں 16ویں صدی کی پروٹسٹنٹ اصلاحِ کلیسیا سے آ ملتی ہیں۔ بے شک، اصلاح کاروں نے خُود اپنی تعلیم کا بائبل سے سُراغ لگایا جیسا کہ اُن کے عقائد نامہ "سولا سکرِپچا" سے اشارہ ہوتا ہے، لہذہ، ریفامڈ تھیالوجی عقائد کا "نیا" نظام نہیں ہے بلکہ ایک ایسا عقائد کا نظام ہے جو رسولی تعلیم کو جاری رکھنا چاہتا ہے۔

عام طور پر، ریفامڈ تھیالوجی بائبل کے اختیار، خُدا کی حاکمیت، نجات یسوع مسیح کے وسیلہ فضل سے ہی، اور انجیلی بشارت کی ضرورت کو مانتی ہے۔ بعض اوقات اِسے خُدا کے ابرہام سےباندھے گئے عہد اور یسوع مسیح کے وسیلہ سے باندھے گئے نئے عہد(لوقا 22:20) پر زور دینے کی وجہ سے عہد و پیما علمِ الہٰیات (کاواننٹ تھیالوجی) بھی کہا جاتا ہے ۔

بائبل کا اختیار
ریفامڈ تھیالوجی سکھاتی ہے کہ بائبل خُدا کا الہام اور بااختیار کلام ہے، اور ایمان اور عمل کے تمام معاملات کے لئے کافی ہے۔

خُدا کی حاکمیت
ریفامڈ تھیالوجی سکھاتی ہے کہ خُدا اپنے کامل اختیار کے ساتھ تمام تخلیق پر کنڑول رکھتاہے۔ اُس نے تمام واقعات کو پہلے سے مقرر کر دیا ہے اِس لئے حالات کی وجہ سےکبھی بھی مایوس نہیں ہو سکتا۔ اِس سے مخلوقات کی مرضی محدود نہیں ہوتی، اور نہ ہی اِس سے خُدا گناہ کا موجد بنتا ہے۔

نجات فضل سے
ریفامڈ تھیالوجی سکھاتی ہے کہ خُدا نے اپنے فضل اور رحمت میں اپنے لوگوں کو نجات دینے اور اُنہیں گناہ اور موت سے بچانے کے لئے چُن لیا ہے۔ ریفامڈ علمِ النجات کو عام طور پر موشحہ TULIP کے طور پر پیش کیا جاتا ہے (جِسے کیلون ازم کے پانچ نقاط کے طور پر بھی جانا جاتا ہے)۔

-T Total Depravity (مکمل خرابی)

انسان اپنی گناہ آلودہ حالت میں مکمل طور پر بے یار و مددگار ، خُدا کے غضب کے نیچے ہے، اور خُدا کو کسی بھی طور پر خوش نہیں کر سکتا۔ مکمل خرابی کا یہ بھی مطلب ہے کہ انسان فطرتی طور پر خُدا کو جاننے کی کوشش نہیں کرتا، جب تک کہ خُدا اپنے فضل سے اُسے ایسا کرنے کے لئے تیار نہیں کرتا (پیدائش 6:5؛ یرمیاہ 17:9؛ رومیوں 3:10-18)۔

-U Unconditional Election غیر مشروط الیکشن

خُدا نے ازل سے ہی گنہگاروں کے ہجوم کو نجات دینے کے لئے چُن لیا ہے، اِس ہجوم کو انسان گن نہیں سکتا (رومیوں 8:29-30؛ 9:11؛ افسیوں 1:4-6، 11-12)۔

-L Limited atonement محدود کفارہ

محدود کفارہ کو "مخصوص نجات" بھی کہا جاتا ہے۔ مسیح نے چُنے گئے لوگوں کے گناہوں کی سزا کو اپنے اُوپر لے لیا اور اِس طرح اپنی موت کے ساتھ اُن کی زندگیوں کی قیمت ادا کی۔ دوسرے الفاظ میں، اُس نے نجات کو صرف "ممکن نہیں بنایا"، بلکہ اُس نے اصل میں نجات کو اُن لوگوں کے لئے حاصل کیا ہے جنہیں اُس نے چُن لیا تھا (متی 1:21؛ یوحنا 10:11؛ 17:9؛ اعمال 20:28؛ رومیوں 8:32؛ افسیوں 5:25)۔

-I Irresistible Grace نا قابلِ مذاحمت فضل

انسان اپنی گناہ آلودہ اور اپنی گرِی ہوئی حالت میں خُدا کی محبت کو روکتا /یا خُدا کی محبت کا مقابلہ کرتا ہے، لیکن خُدا کا فضل اُس کے دل میں کام کرتے ہوئے اُس کے اندر خواہش پیدا کرتا ہے کہ وہ خُدا کی محبت کو کام کرنے دے۔ خُدا کا فضل چُنے گئے لوگوں میں نجات بخش کام کو پورا کرنے میں ناکام نہیں ہوتا (یوحنا 6:37، 44؛ 10:16)۔

-P Perseverance of saints مقدسین کی محافظت

خُدا اپنے مقدسین کو گرنے سے بچاتا ہے، اِس طرح انسان کی نجات ابدی ہے (یوحنا 10:27-29؛ رومیوں 8:29-30؛ افسیوں 1:3-14)۔

انجیلی بشارت کی ضرورت
ریفامڈ تھیالوجی سکھاتی ہے کہ مسیحی انجیلی بشارت کے وسیلہ سے روحانی طور پر، اور پاکیزہ زندگی اور انسانی دوستی کے وسیلہ سے سماجی طور پر اِس دُنیا میں فرق پیدا کرنے کے لئے موجود ہیں۔

ریفامڈ تھیالوجی کی دوسری خصوصیات میں عام طور پر دوسیکرامنٹ (بپتسمہ اور عشائے ربانی) کی پابندی، روحانی نعمتوں کا نظریہِ التوا (روحانی نعمتیں مزید کلیسیا کے لئے نہیں ہیں، اور موجودہ دور میں جاری نہیں ہیں)، اور بائبل کا غیر تقسیمی نظریہ (نان ڈِسپنسیشنل وِیو) شامل ہیں۔ جان کیلون، جان ناکس، الرِچ زوِنگلی، اور مارٹن لوتھر کی تحریروں کو ریفامڈ کلیسیاؤں کی طرف سے اعلی عزت و احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔ ویسٹ منسٹر کنفیشن نے اصلاح شُدہ روایات کی تھیالوجی کو منظم کیا۔ جدید کلیسیائیں اصلاح شُدہ روایات میں پریسبٹیرین، کانگریگیشنل اِسٹ، اور کچھ بپٹسٹ کو شامل کرتی ہیں۔

English



اردو ہوم پیج میں واپسی



ریفامڈ تھیالوجی کیا ہے؟