کب/کیسے ہم روح القدس حاصل کرتے ہیں؟



سوال: کب/کیسے ہم روح القدس حاصل کرتے ہیں؟

جواب:
پولس رسول نے صاف طور سے سکھایا کہ جس لمحہ ہم یسوع مسیح کو اپنا نجات دہندہ قبول کرلیتے ہیں اسی لمحہ ہم روح القدس حاصل کرلیتے ہیں۔ 1 کرنتھیوں 12:13 اعلان کرتا ہے "کیونکہ ہم سب نے خواہ یہودی ہوں خواہ یونانی-خواہ غلام خواہ آزاد۔ ایک ہی روح کے وسیلہ سے ایک بدن ہونے کے لئے بپتسمہ لیا اور ہم سب کو ایک ہی روح پلایا گیا"۔ رومیوں 8:9 ہم سے کہتا ہے کہ اگر کسی شخص میں خدا کا روح نہیں بسا ہے تو وہ مرد یا عورت مسیح کا نہیں۔ "لیکن تم جسمانی نہیں بلکہ روحانی ہو بشر طیکہ خدا کا روح تم میں بسا ہؤا ہے"۔ افسیوں-14 1:13 ہم کو سکھاتا ہے کہ روح القدس نجات کا مہر ہے ان سب کے لئے جو ایمان لاتے ہیں۔ "اور اسی میں تم نے کلام حق کو سنا جو تمہاری نجات کی خوشخبری ہے اور اس پر ایمان لائے پاک موعودہ روح کی مہر لگی۔ وہی خدا کی ملکیت کی مخلصی کے لئے ہماری میراث کا بیعانہ ہے تاکہ اس کے جلال کی ستایش ہو"۔

یہ تینوں عبارتیں ظاہر کرتی ہیں کہ نجات کے موقع پر ہی روح القدس حاصل کرلیا جاتا ہے۔ پولس یہ نہ کہہ سکا کہ ہم سب ایک روح سے بپتسمہ لئے ہوئے ہیں اور ہم سب کو ایک ہی روح سے پلایا گیا۔ اگر نہیں تو تمام کرنتھی ایماندار روح القدس سے بھرے ہوتے۔ رومیوں 8:9 کی عبارت اس سے زیادہ مؤثر ہے جو یہ بیان کرتا ہے کہ اگر کسی شخص میں خدا کا روح نہیں بسا ہے تو وہ مسیح کا نہیں ہے۔ اس لئے روح سے بسا ہوا پایا جانا نجات سے بھرے جانے کی حقیقت کی پہچان ہے۔ اس کے ساتھ ہی روح القدس "نجات کی مہر" نہیں ہوسکتی تھی (افسیوں14- 1:13) اگر اس کو نجات کے موقع پر حاصل نہیں کیا جاتا۔ کئی ایک پاک کلام کی عبارتیں اس بات کو بالکل صاف طور سے ظاہر کرتی ہیں کہ جس لمحہ ہم مسیح کو نجات دہندہ بطور قبول کرتے ہیں اسی لمحہ ہماری نجات محفوظ ہوجا تی ہے۔

یہ بحث غیر منظور شدہ بحث ہے کیونکہ روح القدس کی خدمت گزاری اکثر الجھن پیدا کرتا ہے۔ روح کا حاصل کیاجانا یا اس کا کسی شخص میں سکونت کرنا نجات کے موقع پر ہی واقع ہوتا ہے۔ روح کی معموری مسیحی زندگی میں جاری رہنے والا طریقہ عمل ہے۔ جب ہم اس بات پر قائم رہتےہیں کہ روح القدس کا بپتسمہ بھی نجات کے موقع پر واقع ہو تا ہے تو بہت سے مسیحی اس بپتسمہ میں قائم نہیں رہتے۔ روح القدس کے بپتسمہ میں قائم نہ رہنے کا کبھی کبھی یہ نتیجہ ہوتا ہے کہ روح القدس کے حاصل کئے جانے میں غلط فہمی پیدا کرتا ہے اس بطور کہ یہ نجات کے بعد ہونے والا واقعہ ہے۔

اختتام میں ہم روح القدس کو کیسے حاصل کرتے ہیں؟ ہم خداوند یسوع مسیح کو سادگی سے اپنا شخصی نجات دہندہ قبول کرتے وقت روح القدس حاصل کرلیتے ہیں۔(یوحنا16- 3:5)۔ کب ہم روح القدس حاصل کرتے ہیل؟ روح القدس ہماری مستقل ملکیت تب بن جاتی ہے جس لمحہ ہم ایمان نے آتے ہیں۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



؟ کس طرح ہم روُح القدس حاصل کرتے ہیں