کلیسیا کا اٹھا لیا جانا کیا ہے؟



سوال: کلیسیا کا اٹھا لیا جانا کیا ہے؟

جواب:
کلیسیا کے اٹھا لئے جانے کے لئے جو خاص لفظ استعمال ہوا ہے وہ بائبل میں نہیں پایا جاتا ہے۔ انگریزی میں جو لفظ استعمال ہوا ہے وہ لاطینی لفظ ہے جس کے معنی ہیں اوپر لے جانا، یا ایک جگہ سے دوسری جگہ لے جانا، یا پھر چھین کر لے جانا وغیرہ۔ کلیسیا کے اوپر لے جانے یا کلیسیا کے اٹھا لئے جانے کا جو تصور ہے وہ کلام پاک میں صاف طور سے بتایا گیا ہے۔

کلیسیا کا اٹھا لیا جانا ایک واقعہ ہے جس میں خدا زمین سے تمام ایمانداروں کو چھین لے جائے گا تاکہ وہ اپنی راستباز عدالت کے لئے ایک راستہ تیار کر سکے جو بڑی مصیبت کے دوران زمین پر قائم کیا جائے گا۔ کلیسیا کے اٹھا لئے جانے کا ذکر خاص طور سے 1 تھسلینکیوں 18-13 :4 میں اور 1 کرنتھیوں 54-50 :15 میں کیا گیا ہے ۔ خدا مرے ہوئے ان تمام ایمانداروں کو قبروں سے یا جہاں بھی مرے پڑے ہوں گے ان سب کو زندہ کرے گا اور ان کو جلالی جسم دے گااور ان کو دیگر ایمانداروں کے ساتھ جو زندہ ہوں گے زمین پر سے اٹھا لے گا۔ اور اسی وقت ان کو بھی جلالی جسم دیا جائے گا۔ "کیونکہ خداوند خود آسمان سے للکار اور مقرب فرشتہ کی آواز اور خدا کے نرسنگے کے ساتھ اٹر آئے گا اور پہلے تو وہ جو مسیح میں مرے ہیں جی اٹھیں گے۔ پھر ہم جو زندہ باقی ہوں گے ان کے ساتھ بادلوں پر اٹھا لئے جائیں گے تاکہ ہوا میں خداوند کا استقبال کریں اور اس طرح ہمیشہ خداوند کے ساتھ رہیں گے۔" (1 تھسلینکیوں 17-16 :4) ۔

کلیسیا کا اٹھا لیا جانا ہمارے بدنوں کا لمحہ بھر میں بدل جانے میں شامل کیا جائے گا جو ہم کو ابدیت کے لئے قابل کرسکے۔ " ہم جانتے ہیں کہ جب وہ (مسیح) ظاہر ہو گا تو ہم اس کی مانند ہوں گے اور اس کو ہم ویسے ہی دیکھیں گے جیسا وہ ہے"۔ (1 یوحنا 3:2)۔ کلیسیا کا اٹھا لیا جانا یسوع مسیح کی دوبارہ آمد سے فرق کیا گیا ہے۔ کلیسیا کے اٹھا لئے جانے کے دوران مسیح "بادلوں پر" آتا ہے تاکہ ایمانداروں سے "ہوا میں" ملاقات کر سکے (1 تھسلینکیوں 4:17) ۔ اور دوبارہ آمد کے دوران خداوند یسوع مسیح پورے طور سے زمین پر اترے گا اور زیتون پہاڑ پر کھڑا ہوگا۔ جس کا انجام ایک بہت بڑا زلزلہ واقع ہوگا۔ اور اس کے ساتھ ہی خدا کے دشمن ہرائے جائيں کے۔ (ذکریا– 4-3 :14)۔

کلیسیا کے اٹھا لئے جانے کا اصول پرانے عہد نامے میں سکھایا نہیں گیا تھا اسی سبب سے پولس اس کو بھید کی بات کہتا ہے جو اب ظاہر کیا گیا ہے "دیکھو میں تم سے بھید کی بات کہتا ہوں۔ ہم سب تو نہیں سوئیں گے۔ مگر سب بدل جائيں گے۔ اور یہ ایک دم میں ایک پل میں پچھلا نرسنگا پھونکتے ہی ہوگا۔ کیونکہ نرسنگا پھونکا جائے گا اور مردے غیر فانی حالت میں جی اٹھیں گے اور ہم بدل جائيں گے۔ " (1 کرنتھیوں 52-51 :15)۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



کلیسیا کا اٹھا لیا جانا کیا ہے؟