نفسيات کی بابت مسيحی نظريہ کيا ہے؟



سوال: نفسيات کی بابت مسيحی نظريہ کيا ہے؟

جواب:
کلام پاک سختی سے افسون گروں، جنات کےآشنا، ساحرانہ اورنفسیات کی ملامت کرتاہے-(احبار20:27؛ استثنا13- 18:10 ) اس کے علاوہ شگون نکالنے والے ، جنم پتری نکالنے والے،جیوتش(نجومی)،رمّال، قسمت بتانے والے، فراست ا ليد ( ہاتھہ ديکھنا) مردہ کے روح کو بلانے والے یہ سب کےسب اسی قسم مين آجاتے ہيں-اس طرح کے سازباز يا پيشہ جات اس تصّور کی بنیاد پر ہے کہ لوگوں کا اعتقاد ديوی ديوتاؤں کے ساتھہ ساتھہ ان بدروحوں پرہے يا پھر جن کے مرحوم عزيز بيمار پاے جاتے ہيں وہ ان باتوں کے لۓ صلاح يا رہنمائ کر سکتے ہيں يا پھر انکے لۓحوصلہ افزائ کرتے ہيں-يہ "ديوی ديوتا"خود ہی ایک طرح کی "بد روحيں" يا "شياطین"ہيں(2 کرنتھيوں15 - 11:14)-کلام پاک ان پر اعتقاد کرنے يارکھنے کی مخالفت کرتا ہے اور کوئ سبب پيش نہيں کرتا کہ ہم ان پر کسی طرح کا اعتقاد رکھیں کہ ہمارے عزيز مرحوم ہم سے تعلق رکھہ سکتے ہيں- اگر ايماندار تھے تو وہ جنت ميں بہت ہی عجيب قابل تصور مقام ميں ايک محبتی خدا کے ساتھہ خوشیاں منا رہے ہيں- اگر وہ ايماندار نہیں تھے تو يقينی طور سے جہنم ميں ہيں- خدا کی محبت کا انکار کرتے ہوۓ اور اس کی بغاوت کرتے ہوۓ کبھی نہ ختم ہونے والی عزاب ميں تڑپ رہے ہيں-

اس لۓ اگر ہما رے عزيزجب ہم سے تعلقات نہیں رکھہ سکتے ہيں تو کسطرح جنات کے آشنا، افسون گر اور نفسیات کے ماہر ہماری بابت ٹھیک ٹھیک معلومات رکھہ سکتے ہیں؟اس ميں کغ ایک نفسيات کے ماہروںکے فريب کاری کی پردہ دری شامل ہے- يہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ نفسيات کے ماہر کسی ايک معمولی ذرائع کے وسیلے سے نہايت وسیع مقدار ميں معلومات حاصل کر سکتے ہيں- کبھی کبھی صرف ايک ٹیليفون نمبرکے ذريعے يا کالر آئ ڈی اورانٹرنيٹ کی تلاش کا استعمال کرنے کے ذریعے ايک نفسيات کا ماہر کسی کا نام پتہ پيدائشی تاريخ، شادی کی تاریخ، خاندان کے افراد کے نام وغيرہ معلوم کر ليتے ہيں کسی طرح بغیر انکاری کے نفسیات کے ماہر ان باتوں کی بھی خبردیتے ہين جو ان سے تعلق ميں انے والوں کے لۓ جاننا نا ممکن ہوتا ہے- يہ اطلاعات وہ کہاں سے حاصل کرتے ہيں؟ وہ ابليسون اور شياطين سے يہ سارے معلومات حاصل کرتے ہيں- اور کچھہ عجب نہيں کيونکہ شيطان بھی اپنے آپ کو نورانی فرشتہ کا ہمشکل بنا ليتا ہے- پس اگر اس کے خادم بہی راستبازی کے خادموںکے ہمشکل بنجائيں تو کچھہ بری بات نہيںليکن انکا انجام انکے کاموںکے موافق ہوگا (2 کرنتھيوں15 - 11:14) اعمال-18-16:16 -ايک لڑکی ميں ايک غيب دان روح کی بابت بات کرتا ہے جو مستقبل کے سلسلے ميں پيش بينی کرنے کی قابليت رکھتی تھی جب تک کہ پولس رسول نے ڈانٹ کر اس لڑکی ميں سے بد روح کو نکال نہيں ديا تھا-

شيطان ايکرحم دل اور مددگار ہونے کا ناٹک کرتاہے- وہ خود کو ايک اچھا شخص ہو نے بطور ظاہر کرنے کی کوشش کرتا ہے- شيطان اورابليس نفسيات کے ماہر کو ايک شخص کی بابت وہ سارے اطلاعات پھنچاتے ہيں تاکہ وہ شخص بد روحوںکی جکڑ ميں آجاۓ جس کے لۓ خدا نے منع کيا ہے- ان سے جکڑے ہوۓ لوگ شروع شروع میں برے معصوم سے نظر آتے ہيں- مگر بہت جلد خود کو محسوس کرنے لگتے ہيں کہ وہ انکے ماتحت ہو چکے ہيں اور انکی مرضی کے بغير ہی انہوںنے شيطان کو اجازت دے رکھا ہے کہ وہ انکے قابو ہو جاۓ اور اپنی زندگياں برباد کرے- پطرس رسول نے ايمانداروں کو خبردار کيا کہ"تم ہوشیار اوربيدار رہو، کيونکہ تمہارا مخالف ابليس گرجنے والے شير ببر کی طرح ڈھونڈھتا پھرتا ہے کہ کسکو پھاڑ کھاۓ( 1 پطرس-5:8)- کچھہ معاملات ميں نفسیات کے ماہر خود ہی دھوکا کھا جاتے اور نہين جانتے کہ جو انہوں نےاطلاعات حاصل کی ہے اصل ميں کس کے ذريعے حاصل کی ہے؟ معاملہ چاہے کچھہ بھی ہو يا انہوںنے کہيں سے بھی،کسی بھی وسيلہ سے اطلاعات حاصل کۓ ہوں ان ميں سے کسی کا بھی کسی بد روح ، ساحرہ يا نجومی سے تعلق نہیں رکھتابلکہ يہ سب الہی معلومات کی کھوج کے وسيلے ہيں-اب سوبل يہ ہے کہ خدا ہم سےزندگيوں کے لۓ اپنی مرضی کوجاننے کا فضل کسطرح ديتا ہے؟ خدا کا منصوبہ آسان ہےاس کے باوجود بھی زورآوراور اثرکارک ہے: کلام پاک کا مطالعہ کريں ( دوسرا تموت17- 3:16) اور حکمت حاصل کرنے کے لۓدعا کريں ( يعقوب1:5)-



اردو ہوم پیج میں واپسی



نفسيات کی بابت مسيحی نظريہ کيا ہے؟