نجات حاصل کرنے کے لیے کونسی دُعا ہے؟



سوال: نجات حاصل کرنے کے لیے کونسی دُعا ہے؟

جواب:
بہت سے لوگ پوچھتے ہیں ’’کیا ایسی کوئی دُعا ہے جس کے کرنے سے نجات کی ضمانت مل سکے؟‘‘ یہ یاد رکھنا بہت اہم ہے کہ نجات دُعا کرنے یا کوئی مخصوص الفاظ بولنے سے نہیں ملتی۔ بائبل میں کسی شخص کے بارے میں نہیں ملتا کہ اُس نے دُعا کرنے سے نجات پائی ہو۔ دُعا کے ذریعے نجات حاصل کرنابائبل کا طریقہ نہیں ہے۔

بائبل کا طریقہ نجات یسوع مسیح پر ایمان لانا ہے۔ یوحنا۱۶:۳ میں مرقوم ہے ’’کیونکہ خُدا نے دُنیا سے ایسی محبت رکھی کہ اپنا اکلوتا بیٹا بخش دیا تاکہ جو کوئی اُس پر ایمان لائے ہلاک نہ ہو بلکہ ہمیشہ کی زندگی پائے‘‘۔ نجات ایمان سے (افسیوں۸:۲)، یسوع کو نجات دہندہ قبول کرنے (یوحنا۱۲:۱)، اور مکمل طور پر صرف یسوع پر بھروسہ کرنے سے حاصل ہوتی ہے (یوحنا۶:۱۴،اعمال۱۲:۴)،نہ کہ دُعا کرنے سے۔

نجات کے لیے بائبل کا پیغام بیک وقت سادہ، اور واضح اور حیرت انگیز ہے۔ ہم سب نے خُدا کے خلاف گناہ کیا (رومیوں۲۳:۳)۔ مسیح یسوع کے علاوہ کوئی اور نہیں جس نے اپنی ساری زندگی گناہ سے پاک گزاری ہو (واعظ۲۰:۷)۔ ہم نے اپنے گناہ کی وجہ سے خدا کی عدالت میں موت پیدا کی(رومیوں۲۳:۶)۔ ہم اپنے گناہ کی وجہ سے سزاوار ٹھہرے، اور اب ہم اپنے آپ سے ایسا کچھ نہیں کر سکتے کہ خُدا کے سامنے راست ٹھہر سکیں۔ خُدا ہماری محبت کی وجہ سے یسوع مسیح کی ذات میں انسان بنا۔ یسوع نے کامل زندگی گزاری اور ہمیشہ سچائی کا پیغام سکھایا۔ لیکن انسان نے یسوع کو ردّ کیااور اُسے صلیبی موت کے حوالے کر دیا۔ تاہم اِس معصوم انسان کے قتل کے خوفناک عمل سے نجات مہیا کی گئی۔ یسوع ہماری جگہ مرا۔ اُس نے ہمارے گناہوں کی عدالت کا بوجھ اپنے اُوپر لے لیا (۲۔کرنتھیوں۲۱:۵)۔ پھر یسوع زندہ ہوا تاکہ ثابت کرے کہ ہمارے گناہوں کی ادائیگی کافی ہے اور اُس نے گناہ اور موت پر فتح پائی ہے (۱۔کرنتھیوں۱۵)۔ یسوع کی قُربانی کے نتیجہ میں خُدا ہمیں نجات تحفہ کے طور پر پیش کرتا ہے۔ خُدا ہم سب کو بُلاتا ہے کہ ہم اپنے گناہوں سے توبہ کریں (اعمال۳۰:۱۷)اور ایمان لائیں کہ یسوع ہمارے گناہوں کی مکمل ادائیگی ہے (۱۔یوحنا۲:۲)۔ نجات خُدا کے پیش کردہ تحفہ کو قبول کرنے سے حاصل ہوتی ہے نہ کہ مخصوص دُعا کرنے سے۔

تاہم، اِس کا یہ ہرگز مطلب نہیں کہ نجات حاصل کرنے میں دُعا کا کوئی عمل دخل نہیں ۔ اگر آپ انجیل کو سمجھتے ہیں، ایمان رکھتے ہیں کہ خُدا کا کلام سچا ہے، اور یسوع کو اپنی نجات کے طور پر قبول کرتے ہیں، تو اپنے ایمان کے اظہار کے لیے دُعا عمدہ اور مناسب ہے۔ دُعا خُدا کے ساتھ گفتگو کرنے،ترقی کے لیے حقائق قبول کرنے، اور یسوع نجات دہندہ پر مکمل بھروسہ کرنے کا ایک طریقہ ہو سکتی ہے۔ دُعا نجات حاصل کرنے کے لیے یسو ع پر ایمان لانے کے عمل سے منسلک ہو سکتی ہے۔

دوبارہ، تاہم یہ بات نتیجہ خیز ہے کہ آپ کی نجات کی بنیاد دُعا کرنے پر نہیں ہے۔ دُعا کرنا آپ کوبچا نہیں سکتا۔ اگر آپ نجات حاصل کرنا چاہتے ہیں جو کہ یسوع کے وسیلہ سے دستیاب ہے ، اُس پر ایمان لائیں۔ مکمل اعتقاد رکھیں کہ آپ کے گناہوں کے لیے اُس کی قُربانی ہی کافی ہے۔ کامل طور پر اُس پر بھروسہ کریں کہ وہ آپ کا نجات دہندہ ہے۔ نجات حاصل کرنے کے لیے یہی بائبل کا طریقہ ہے۔ اگر آپ نے یسوع کو اپنا نجات دہندہ قبول کر لیا ہے، تو پھر آپ خُدا سے دُعا کریں۔ خُدا کو کہیں کہ آپ یسوع کے لیے اُس کے مشکور ہیں۔ اُس کی محبت اور قربانی کے لیے اُس کی تمجید کریں۔ یسوع کا شکریہ ادا کریں کہ وہ آپ کے گناہوں کی خاطر مُوا اور آ پ کے لیے نجات مہیا کی۔ بائبل کے مطابق دُعا اور نجات کے درمیان یہی تعلق ہے۔

جو بھی کچھ آپ نے یہاں پڑھا ہے اس کی بنیاد پر کیا آپ نے مسیح کے لئے فیصلہ لیا ہے؟ اگر آپکا جواب ہاں میں ہے تو برائے مہربانی اس جگہ پر کلک کریں جہاں لکھا ہے کہ آج میں نے مسیح کو قبول کر لیا ہے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



نجات حاصل کرنے کے لیے کونسی دُعا ہے؟