"عہدِ عتیق میں آنے والے مسیح کے بارے میں پیشن گوئیاں کہاں ہیں؟



سوال: "عہدِ عتیق میں آنے والے مسیح کے بارے میں پیشن گوئیاں کہاں ہیں؟

جواب:
عہدِ عتیق میں یسوع مسیح کے بارے میں بہت سی پیشن گوئیاں موجود ہیں۔ کُچھ مفسرین نے مسیح کے بارے میں پیشن گوئیوں کی تعداد سینکڑوں بتائی ہے۔ کچھ کا ذکر مندرجہ ذیل کیا جا رہا ہے جو بالکل واضح اور اہم سمجھی جاتی ہیں۔

یسوع کی پیدائش کے متعلق:
یعسیاہ۱۴:۷ "لیکن خُداوند آپ تم کو ایک نشان بخشے گا۔ دیکھو ایک کنواری حاملہ ہو گی اور بیٹا پیدا ہو گا اور وہ اُس کا نام عِمانُوایل رکھے گی"۔ یعسیاہ۶:۹ "اِس لئے ہمارے لئے ایک لڑکا تولُّد ہو ا اور ہم کو ایک بیٹا بخشا گیا اور سلطنت اُس کے کندھے پر ہو گی اور اُس کا نام عجیب مشیر خُدایِ قادر ابدیت کا باپ سلامتی کا شہزادہ ہو گا"۔ میکاہ ۲:۵ "لیکن اے بیت لحم اِفراتاہ اگرچہ تو یہوداہ کے ہزاروں میں شامل ہونے کے لئے چھوٹا ہے تو بھی تجھ میں سے ایک شخص نکلے گا اور میرے حضور اسرائیل کا حاکم ہو گا اور اُس کا مصدر زمانہِ سابق ہاں قدیمُ الایّام سے ہے"۔

یسوع کی خدمت اور موت کے بارے میں:
زکریاہ۹:۹ "اے بنتِ صیّون تُو نہایت شادمان ہو۔ اے دُخترِ یروشلیم خوب للکار کیونکہ دیکھ تیرا بادشاہ تیرے پاس آتا ہے۔ وہ صادق ہے اور نجات اُس کے ہاتھ میں ہے وہ حلیم ہے اور گدھے پر بلکہ جوان گدھے پر سوار ہے" زبور۱۶:۲۲۔۱۸ "کیونکہ کُتوں نے مُجھے گھیر لیا ہے۔ بدکاروں کی گروہ مُجھے گھیرے ہوئے ہے۔ وہ میرے ہاتھ اور پاؤں چھیدتے ہیں۔ میں اپنی سب ہڈیاں گِن سکتا ہوں۔ وہ مُجھے تاکتے اور گھورتے ہیں۔ وہ میرے کپڑے آپس میں بانٹتے ہیں اور میری پوشاک پر قُرعہ ڈالتے ہیں"۔

یسوع مسیح کے بارے میں واضح ترین پیشن گوئی یعسیاہ ۵۳ باب ہے۔ خاص طور پر یعسیاہ۳:۵۳۔۷ "وہ آدمیوں میں حقیر و مردُود۔ مردِ غم ناک اور رنج کا آشنا تھا۔ لوگ اُس سے گویا رُوپوش تھے اُس کی تحقیر کی گئی اور ہم نے اُس کی کچھ قدر نہ جانی۔ حالانکہ کہ وہ ہماری خطاؤں کے سبب سے گھایل کیا گیا اور ہماری بد کرداری کے باعث کُچلا گیا۔ ہماری ہی سلامتی کےلئے اُس پر سیاست ہوئی تاکہ اُس کے مار کھانے سے ہم شفا پائیں۔ ہم سب بھیڑوں کی مانند بھٹک گئے۔ ہم میں سے ہر ایک اپنی راہ کو پِھرا پر خُداوند نے ہم سب کی بدکرداری اُ س پر لادی۔ وہ ستایا گیا تو بھی اُس نے برداشت کی اور مُنہ نہ کھولا۔ جس طرح برّہ جِسے ذبح کرنے کو لے جاتے ہیں اور جس طرح بھیڑ اپنے بال کترنے والوں کے سامنے بے زُبان ہے اُسی طرح وہ خاموش رہا"۔

دانی ایل میں نویں باب کی ستر ہفتوں کی پیشن گوئی جو یسوع مسیح کی پیدائش کے بارے میں ٹھیک تاریخ کے ساتھ اُس کے "کاٹ دیئے جانے" کا بھی ذکر کرتی ہے۔ یعسیاہ۶:۵۰ نہایت درُستگی کے ساتھ یسوع کی اذیت کا ذکر کرتی ہے جو یسوع نے سہی۔ زکریاہ۱۰:۱۲ مسیح کے چھیدے جانے کی پیشن گوئی کرتی ہے جو کہ یسوع کی موت کے بعد صلیب پر پوری ہوئی۔ اور بھی بہت سی مثالیں دی جا سکتی ہیں لیکن اتنی ہی کافی کافی ہوں گی۔ عہد عتیق خاص طور پر یسوع کو آنے والے مسیح کے طور پر پیش کرتا ہے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



"عہدِ عتیق میں آنے والے مسیح کے بارے میں پیشن گوئیاں کہاں ہیں؟