نیا آسمان اور نئی زمین کیا ہیں؟



سوال: نیا آسمان اور نئی زمین کیا ہیں؟

جواب:
بہت سے لوگوں کے پاس ایک غلط تصور ہے کہ حقیقت میں جنت کی کیا شکل ہے۔ مکاشفہ 21-22 باب نئے آسمانوں اور نئی زمین کو تفصیل سے پیش کرتے ہیں۔ آخر زمانے کے واقعات کے بعد، موجودہ آسمان اور زمین کو بدل کر اس کی جگہ پر نیا آسمان اور نئی زمین کو رکھاجائيگا۔ ایمانداروں کی ابدی سکونت کی جگہ نئی زمین ہوگی اور وہ نئی زمین ہی "جنت" کہلا ئيگی جس پر ہم ایماندار ابدیت گزارینگے۔ یہ نئی زمین ہوگی جس میں نئے یروشلم، آسمانی شہر کو رکھا جائيگا۔ اس نئی زمین پر جو پھاٹکیں ہونگی ان میں ہیرے جواہرات جڑے ہونگے اور جس میں سونے کی سڑکیں ہونگی۔

جنت — نئی زمین— ایک مادّی جگہ ہے جہاں ہم مادی جلالی جسم کے ساتھ سکونت کرینگے ( 1 کرنتھیوں58- 15:35)۔ جنت کا تصور جو "بادلوں کے" کا ہے وہ بائيبل سے پرے ہیں یعنی بائيبل کے مطابق نہیں ہے۔ اور جو تصور ہے کہ ہم " جنت کے اطراف روح کی مانند تیرتے رہینگے" یہ بھی بائیبل کے مطابق نہیں ہے۔ یعنی کہ یہ ایک غلط تصور ہے۔ جنت جسکا تجربہ ایماندار لوگ کرینگے وہ ایک نیا اور کامل اور ٹھوس سیارہ ہوگا جس پر ہم سکونت کرینگے۔ نئی زمین گناہ سے، برائي سے، بیماری سے، تنگي مصیبت اور موت سے آزاد ہوگی۔ یہ ہوبہو موجودہ مادی زمین کی طرح ہی ہوگی مگر ان سب میں ایک نیا پن نئے مخلوق کے ساتھ شاید ایک ننے لطف اندوزی کے ساتھ ہوگا مگر یہ گناہ کی لعنت کے بغیر ہوگا۔

نئے بہشت کی بابت کیا ہے؟ یہ یاد رکھنا رضروری ہے کہ قدیم زمانے کے لوگوں کے ذریعہ "بہشت" یا "فردوس" آسمانوں کو اور باہری خلا کو کہا جاتا تھا اس کے علاوہ اس جگہ کو خدا کی سکونت گاہ مانا جاتا ہے۔ اس لئے مکاشفہ 21:1 جب نئے آسمان کا حوالہ دیتا ہے تو وہ اس طرح اشارہ کرتا ہے کہ ایک نئے کائينات — ایک نئي زمین، نئے آ‎سمان اور ایک نئي باہری خلا کی تخلیق ہوگی۔ ایسا نظرآتا ہے جیسے کہ خدا کی جنت کو نئے طور سے تخلیق کیا جائيگا تاکہ کائينات کی ہر ایک چیز کو "تازہ شروعات سے کیا جائے چاہے وہ مادّی ہو یا روحانی۔ کیا نئے جنت میں ابدیت کے لئے ہماری پہنچ ہوگی۔ بالکل ممکن طور سے ہوگی، مگر ہمکو انتظار کرتے ہوئے معلوم کرنا پڑیگا کہ کیا ہم اس لایق ہیں؟ ہونے دیں کہ ہم سب کے سب جنت کی سمجھ کے لئے خدا کے کلام کو شکل دیں۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



نیا آسمان اور نئی زمین کیا ہیں؟