اگر ایک مسیحی کی شادی غیر ایماندار سے ہوتی ہے تو اُسے کیا کرنا چاہیے؟


سوال: اگر ایک مسیحی کی شادی غیر ایماندار سے ہوتی ہے تو اُسے کیا کرنا چاہیے؟

جواب:
غیر ایماندار سے شادی ہونا ایک مسیحی زندگی کے لئے مشکل ترین چیلنجوں میں سے ایک ہو سکتا ہے۔ شادی ایک مقدس عہد ہے جو دو لوگوں کو ایک تن میں اکٹھے جوڑتا ہے (متی باب 19 آیت 5)۔ ایک ایماندار اور غیر ایماندار کے لئے پُر امن اتحاد میں زندگی گزارنا کافی مشکل ہو سکتا ہے (2 کرنتھیوں باب 6 آیات 14 تا 15)۔ اگر شادی کے بعد ایک شریک مسیحی بن جاتا ہے، تو دو مختلف اختیارات کے تحت زندگی گزارنے کی فطری کوششیں فوری طور پر واضح ہو جاتی ہیں۔

اکثر اِس صورت ِ حال میں مسیحی شادی سے باہر کسی راستہ کی تلاش کریں گے جو اُن کو قائل کرے کہ خُدا کو حقیقی طور پر جلال دینے کے لئے یہی واحد راستہ ہے۔ تاہم، خُدا کا کلام اِس سے برعکس فرماتا ہے۔ یہ بہت اہم بات ہے کہ ہم نہ صرف اپنی صورتحال میں خوشدل ہوں، بلکہ اپنے مخالف حالات سے باہر اُسے جلال دینے کے طریقوں کی بھی تلاش کریں (1 کرنتھیوں باب 7 آیت 17)۔ بائبل 1 کرنتھیوں باب 7 آیات 12 تا 14 میں خاص طور پر اُن لوگوں سے مخاطب ہے جن کی شادی غیر ایمانداروں سے ہوتی ہے ، "۔۔۔اگر کسی بھائی کی بیوی بااِیمان نہ ہو اور اُس کے ساتھ رہنے کو راضی ہو تو وہ اُس کو نہ چھوڑے۔ اور جس عورت کا شوہر بااِیمان نہ ہو اور اُس کے ساتھ رہنے کو راضی ہو تو وہ شوہر کو نہ چھوڑے۔ کیونکہ جو شوہر بااِیمان نہیں وہ بیوی کے سبب سے پاک ٹھہرتا ہے اور جو بیوی بااِیمان نہیں وہ مسیحی شوہر کے باعث پاک ٹھہرتی ہے۔۔۔"

غیر ایمانداروں سے شادی کرنے والے مسیحیوں کو روح القدس کی قدرت کے لئے دُعا کرنے کی ضرورت ہو گی تاکہ وہ اُنہیں مسیح کا اقرار کرنے اور خُدا کی حضوری کے نور میں زندگی گزارنے کے قابلِ بنائے (1 یوحنا باب 1 آیت 7)۔ اُنہیں خُدا کی تبدیل کرنے والی قدرت کی تلاش کرنی چاہیے تاکہ وہ اُن کے دِلوں کو تبدیل کرے اور اُن کی زندگیوں میں روح القدس کے پھل پیدا کرے (گلتیوں باب 5 آیات 22 تا 23)۔ مسیحی بیوی پابند ہے کہ اُس کے پاس اطاعت گزار دِل ہو ، یہاں تک کہ اپنے غیر ایماندار شوہر کی بھی اطاعت کرے(1 پطرس باب 3 آیت 1)، اور اُسے خُدا کے قریب رہنے اور اُس پر بھروسہ کرنے کی ضرورت ہو گی کہ اُسکا فضل اُسے ایسا کرنے کے قابل بنائے۔

مسیحی ہونےکا مطلب الگ تھلگ زندگی گزارنا نہیں ہے، اُنہیں بیرونی ذرائع جیسا کہ چرچ اور بائبل سٹڈی گروپس سے مدد حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔ غیر ایماندار سے شادی ہونا رشتے کی پاکیزگی کو تبدیل نہیں کرتا، لہذہ یہ ہر مسیحی کی ترجیح ہونی چاہیے کہ وہ مسیح کے نور کو آب و تاب کے ساتھ چمکنے کے لئے اجازت دیتے ہوئے (افسیوں باب 5آیت 14) اپنے شریکِ حیات کے لئے اور ایک اچھی مثال قائم کرنے کے لئے دُعا کرے۔ خُدا کرے 1 پطرس باب 3 آیت 1 میں پائی جانے والی سچائی ایک غیر ایماندار شریک حیات کو "جیتنے" کے لیے ہر اُس مسیحی کی اُمید اور مقصد بنے جِس کی شادی غیر ایماندار سے ہوتی ہے۔

English
اردو ہوم پیج میں واپسی
اگر ایک مسیحی کی شادی غیر ایماندار سے ہوتی ہے تو اُسے کیا کرنا چاہیے؟