روح کا پھل کیا ہے؟


سوال: روح کا پھل کیا ہے؟

جواب:
گلتیوں۲۲:۵۔۲۳ بیان کرتی ہے، "مگر روح کا پھل محبت، خوشی، اطمینان، تحمُّل، مہربانی، نیکی، ایمان داری، حلم، پرہیزگاری ہے"۔ روح کا پھل ایک مسیحی کی زندگی میں روح کی حضوری کا نتیجہ ہے۔ بائبل واضح طور پر تعلیم دیتی ہے کہ جب کوئی شخص یسوع مسیح پر ایمان لاتا ہے تو اُسے اُسی وقت روح القدس مل جاتا ہے (رومیوں۹:۸؛۱۔کرنتھیوں۱۳:۱۲؛افسیوں۱۳:۱۔۱۴)۔ ایک مسیحی کی زندگی میں روح القدس کے آنے کے مقاصد میں سے ایک بنیادی مقصد اُس کی زندگی کو تبدیل کرنا ہے۔ یہ روح القدس کا کام ہے کہ وہ ہمیں مسیح کی صورت پر ڈھالے اور ہمیں اُس کی مانند بنائے۔

روح کے پھل کا ایک گنہگار فطرت کے اعمال سے برائے راست موازنہ گلتیوں۱۹:۵۔۲۱ میں پیش کیا گیا ہے۔ "اب جسم کے کام تو ظاہر ہیں یعنی حرام کاری۔ ناپاکی۔ شہوت پرستی۔ بُت پرستی۔ جادوگری۔ عداوتیں۔ جھگڑا۔ حسد۔غصّہ۔ تفرِقے۔ جُدائیاں۔ بدعتیں۔ بُعض۔ نشہ بازی۔ ناچ رنگ اور اِن کی مانند۔ اِن کی بابت تمہیں پہلے سے کہے دیتا ہوں جیسا کہ پیشتر جتا چکا ہوں کہ ایسے کام کرنے والے خُدا کی بادشاہی کے وارِث نہ ہوں گے"۔ یہ حوالہ تمام قسم کے لوگوں کو بیان کرتا ہے، جب وہ مسیح کو نہیں جانتے، اور روح القدس کے اثر کے نیچے زندگی نہیں گزار تے ۔ ہمارا گناہ آلودہ جسم کئی اقسام کے پھل پیدا کرتا ہے جو ہماری فطرت کی عکاسی کرتے ہیں، جبکہ روح القدس ایسی اقسام کے پھل پیدا کرتا ہے جو اُس کی فطرت کی عکاسی کرتا ہے۔

مسیحی زندگی گناہ آلودہ فطرت اور مسیح کی دی ہوئی فطرت کے درمیان جنگ ہے (۲۔کرنتھیوں۱۷:۵)۔ گناہ میں گرے ہوئے انسانوں کے طور پر، ہم ابھی بھی جسم کے قبضہ میں ہیں جو گناہ کی خواہش کرتا ہے (رومیوں۱۴:۷۔۲۵)۔ مسیحیوں کے طور پر، ہمارے پاس روح القدس ہے جو ہم میں اُس کا پھل پیدا کر رہا ہے، اور ہمارے پاس گناہ آلودہ فطرت کے اعمال پر غالب آنے کے لئے روح القدس کی قدرت موجود ہے (۲۔کرنتھیوں۱۷:۵؛فلپیوں۱۳:۴)۔ ایک مسیحی روح القدس کے پھلوں کے مظاہرہ کرنے میں مکمل طور پر فتح مند نہیں ہو سکتا۔، اگرچہ وہ روح القدس کو اپنی زندگی میں زیادہ سے زیادہ پھل پیدا کرنے ، اور مخالف گناہ آلودہ خواہشات پر غالب آنے کی دعوت دیتا ہے۔ روح کا پھل وہی ہے جن کی نمائش ہماری زندگیوں میں خُدا چاہتا ہے اور یہ صرف روح القدس کی مدد سے ممکن ہے!

English
اردو ہوم پیج میں واپسی
روح کا پھل کیا ہے؟