مکاشفہ کے چار گھڑ سوار کون ہیں؟


سوال: مکاشفہ کے چار گھڑ سوار کون ہیں؟

جواب:
مکاشفہ کے چار گھڑ سواروں کا ذکر مکاشفہ 8-1:6میں ملتا ہے۔ چار گھڑ سوار مختلف واقعات کی علامتی وضاحت ہے جو کہ آخری دور میں واقع ہوں گے۔ مکاشفہ کے پہلے گھڑ سوار کا ذکر مکاشفہ 2:6میں ملتا ہے، "اور میں نے نگاہ کی تو کیا دیکھتا ہوں کہ ایک سفید گھوڑا ہے اور اُس کا سوار کمان لئے ہوئے ہے۔ اُسے ایک تاج دیا گیا اور وہ فتح کرتاہوا نکلا تاکہ اور بھی فتح کرے"۔ پہلا گھڑ سوار مُمکنہ طور پر مخالفِ مسیح کو پیش کرتا ہے، جِسے اختیار دیا جائے گا اور وہ اپنے مخالفین کو فتح کرے گا۔ مخالفِ مسیح حقیقی مسیح کی جھوٹی نقل ہے، جو سفید گھوڑے پر سوار ہو کر آئے گا (مکاشفہ 16-11:19)۔

مکاشفہ کا دوسرا گھڑ سوار مکاشفہ 4:6میں ظاہر ہوتا ہے، "پھر ایک اور گھوڑا نکلا جس کا رنگ لال تھا۔ اُس کے سوار کو یہ اختیار دیا گیا کہ زمین پر سے صُلح اُٹھا لے تاکہ لوگ ایک دوسرے کو قتل کریں اور اُسے ایک بڑی تلوار دی گئی"۔ دوسرا گھڑ سوار خوفناک جنگ کو پیش کرتا ہے جو کہ آخری دور میں ہو گی۔ تیسرے گھڑ سوار کا ذکر مکاشفہ 6-5:6 میں ملتا ہے، "۔۔۔اور میں نے نگاہ کی تو کیا دیکھتا ہوں کہ ایک کالا گھوڑا ہے اور اُس کے سوار کے ہاتھ میں ایک ترازو ہے۔ اور میں نے گویا اُن چاروں جانداروں کے بیچ میں سے یہ آواز آتی سُنی کہ گیہوں دِینار کے سیر بھر اور جَو دِینار کے تین سیر اور تیل اور مے کا نُقصان نہ کر"۔ مکاشفہ کا تیسرا گھڑ سوار ایک بڑے قحط کو پیش کرتا ہے جو کہ ممکنہ طور پر دوسرے گھڑ سوار کی طرف سے جنگوں کے نتیجہ میں پڑے گا۔

چوتھے گھڑ سوار کا ذکر مکاشفہ 8:6میں ملتا ہے، "اور میں نے نگاہ کی تو کیا دیکھتا ہوں کہ ایک زَرد سا گھوڑا ہے اور اُس کے سوار کا نام موت ہے اور عالمِ ارواح اُس کے پیچھے پیچھے ہے اور اُس کو چوتھائی زمین پر یہ اختیار دیا گیا کہ تلوار اور کال اور وبا اور زمین کے درِندوں سے لوگوں کو ہلاک کریں"۔ مکاشفہ کا چوتھا گھڑ سوار موت اور تباہی کی علامت ہے۔ ایسا لگتا ہے اِس کا پِچھلے گھوڑے کے ساتھ اتحاد ہے۔ چوتھا گھڑ سوار خوفناک بیماریوں اور وباؤں کے ساتھ مزید جنگیں اور خوفناک قحط سالیاں لائے گا۔ سب سے زیادہ حیرت انگیز اور خوفناک بات یہ ہے کہ مکاشفہ کے چاروں گھڑ سوار بدترین عدالت کے صرف "پیش رو" ہیں جو کہ بعد میں بڑی مصیبتوں کے دو ر میں کی جائے گی (مکاشفہ 9-8 اور 16ابواب)۔

English
اردو ہوم پیج میں واپسی
مکاشفہ کے چار گھڑ سوار کون ہیں؟