میں کس طرح ایک جھوٹے استاد/جھوٹے نبی کی پہچان کر سکتا ہوں؟



سوال: میں کس طرح ایک جھوٹے استاد/جھوٹے نبی کی پہچان کر سکتا ہوں؟

جواب:
یسوع نے ہم کو خبر دار کیا کہ "جھوٹے مسیح اور جھوٹے نبی" اور یہاں تک کہ وہ خدا کے چنے ہوئے لوگوں کو بھی دھوکہ دیں گے۔ (متی 27-23 :24 اور دیکھیں 2 پطرس 3:3 اور یہوداہ 17-18) جھوٹے لوگوں اور جھوٹے استادوں کے خلاف سچائی کو جاننے کے ذریعہ خود کو بچانا یا خود کی حفاظت کرنا یہ بہترین طریقہ ہے۔ ایک بناوٹی چیز کو پیش کرنے کے لئے اصلی چیز کو پڑھنا ضروری ہوتاہے۔ کوئی بھی ایماندار جو "صحیح طور سے سچائی کے کلام کو ہاتھ میں لیتا ہے (2 تموتھیس 2:15) اور جو کلام پاک کو ہوشیاری سے پڑھتاہے وہ جھوٹے اصولوں کی پہچان کر سکتا ہے۔ مثال کے طور پر ایک ایماندارجس نے متی 17-16 :3 میں خدا باپ، بیٹے اور روح القدس کے کاموں کی بابت پڑھ رکھا ہو وہ فورا کسی بھی اصولوں کی بابت سوال اٹھائے گا جو خدائے تثلیث کا انکار کرتا ہو۔ اس لئےپہلا قدم یہ ہے کہ بائبل کا مطالعہ کریں اور کلام پاک جو بھی کہتا ہے اس کے ذریعہ تمام تعلیمات کی تنقید کریں یا صحیح فیصلہ لیں۔

یسوع نے کہا درخت اپنے پھلوں کے ذریعہ پہچانا جاتاہے (متی 12:33) جب "پھلوں" پر غور کیا جاتا ہے تو یہاں تین خاص جانچ کسی بھی استاد پر کیا جا سکتا ہے۔ یہ فیصلہ کرنے کے لئے کہ اس کی تعلیم میں چاہے وہ آدمی ہو یا عورت کتنی درستی یا کتنا کھرا پن پایا جاتاہے:

1) یہ استاد یسوع کی بابت کیا کہتاہے۔ متی 16-15 :16 میں یسوع اپنے شاگردوں سے خود کے بارے میں سوال کرتاہے کہ "لوگ ابن آدم کو کیا کہتے ہیں"؟ پطرس جواب دیتا ہے "تو زندہ خدا کا بیٹا مسیح ہے"۔ اور اس جواب کے لئے یسوع مسیح اس سے کہتاہے کہ "تو مبارک ہے" 2 یوحنا9 نو آیت میں ہم پڑھتے ہیں "جو کوئی آگے بڑھ جاتا ہے اور مسیح کی تعلیم پر قائم نہیں رہتا اس کے پاس خدا نہیں۔ جو اس تعلیم پر قائم رہتا ہے اس کے پاس باپ بھی ہے اور بیٹا بھی"۔ دوسر ے الفاظ میں یسوع مسیح اور اس کے چھٹکارے کا کام زیادہ ضروری ہے؟ کوئی بھی شخص جو یسوع کو خدا کے برابر ہونے سے انکار کرتاہے اس سے ہوشیار رہیں۔ اور اس شخص سے بھی ہوشیار رہیں جو یسوع کی ذبیحی موت کو اظہار بطور کم اہمیت دیتاہے یا وہ شخص جو یسوع کی حلیمی کاانکار کرتا ہو۔ پہلایوحنا 2:22 کہتاہے "کون جھوٹا ہے سوا اس کے جو یسوع کے مسیح ہونے کا انکار کرتا ہے؟ مخالف مسیح وہی ہے جو باپ اور بیٹے کا انکار کرتاہے"۔

2) کیا یہ استاد انجیل کی منادی کرتا ہے؟ کلام پاک کے مطابق انجیل کو یسوع کی موت، دفن اور قیامت کی بات خوشخبری بطور تشریح کیا گیاہے (1 کرنتھیوں 4-1 :15)۔ یہ بیان جتنا زیادہ سننے میں اچھا لگتاہے کہ "خدا آپ سے محبت رکھتاہے" "خدا چاہتا ہے کہ آپ بھوکوں کو کھانا کھلائیں"۔ "اور خدا چاہتاہے کہ آپ دولتمند بنے رہیں" یہ انجیل کا مکمل پیغام نہیں ہے۔ جس طرح پولس گلیتوں 1:7 میںخبردار کرتاہے، "بعض ایسے ہیں جو تمہیں گھبرا دیتے اور مسیح کی خوشخبری کو بگاڑنا چاہتے ہیں۔" کوئي بھی نہیں یہاں تک کہ ایک بڑے پرچارک کا بھی کوئی حق نہیں کہ اس پیغام کو بدلے جو خدا نے ہم کو بخشا ہے۔ "جیساکہ ہم پیشتر کہہ چکے ہیں ویسا ہی اب بھی میں پھر کہتاہوں کہ اس خوشخبری کے سوا جو تم نے قبول کی تھی اگر کوئی تمہیں اور خوشخبری سناتاہے تو ملعون ہو (گلتیوں 1:9)۔

3) تیسرا ہے کیا یہ استاد ان خوبیوں کااظہار کرتاہے جس سے خداوند کاجلال ظاہر ہو ؟ جھوٹے استادوں کی بابت بات کرتے ہوئے یہودا کا 11 آیت کہتاہے "ان پر افسوس کہ یہ قائن کی راہ پر چلے اور مزدوری کے لئے بڑی حرص سے بالعام کی سی گمراہی اختیار کی اور قورح کی طرح مخالفت کرکے ہلاک ہوئے۔ دوسرے لفظوں میں ایک جھوٹا استاد اپنے گھمند کے ذریعہ جانا جا سکتا ہے ، قائن کا (خدا کے منصوبہ کا انکار کیاجانا) لالچ بطور (پیسہ کے لئے بلعام کا نبوت کیا جانا) اور بغاوت میں آکر (قورح کا موسی کے خلاف آواز اٹھانا اور اپنے درجہ کو اونچاکرنا)۔ یسوع نے کہا ایسے لوگوں سے ہوشیار رہنا اور ان کے چلوں سے یعنی ان کےبرے کاموں کے نتیجوںسے تم ان کو پہچان لوگے (متی 20-15 : 7)۔

مزید مطالعہ کے لئے کلام پاک ان کتابوں کی نظر ثانی کریں جس سے خاص طور سے کلیسیا کے اندر جھوٹی تعلیم کا مقابلہ کر سکو۔ وہ کتابیں ہیں: گلتیوں، 1 پطرس، 1 یوحنا ، 2 یوحنا اور یہوداہ۔ جھوٹے استاد اور جھوٹے نبی کی جانچ کرنا ہم جانتے ہیں کہ یہ اکثر مشکل ہوجاتا ہے۔ اور یہ نہ بھولیں کہ شیطان بھی کبھی کبھی خود کو ایک نورانی فرشتہ کا ہمشکل بنا لیتا ہے (2 کرنتھیوں 11:14)۔ اور شیطان کے کارکن یعنی اسکے ما تحت رہ کر کام کرنے والے راستبازی کے خادموں کی ہمشکل بنا لیتے ہیں (2 کرنتھیوں 11:15)۔ صرف اور صرف پوری طرح سے سچائی کے علم سے یعنی کلام پاک کے علم سے واقف کار ہونے کے ذریعہ ہم جھوٹے لوگوں ، جھوٹے استادوں اور جھوٹے نبی کی پہچان کر سکتے ہیں۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



میں کس طرح ایک جھوٹے استاد/جھوٹے نبی کی پہچان کر سکتا ہوں؟