بائبل غیب گو( گپ شپ کرنے والے)کے بارے میں کیا فرماتی ہے؟



سوال: بائبل غیب گو( گپ شپ کرنے والے)کے بارے میں کیا فرماتی ہے؟

جواب:
پُرانے عہد نامہ میں جِس عبرانی لفظ کا ترجمہ "غیب گو" کیا گیا ہے، اُس کی وضاحت اِس طور پر کی جاتی ہے"وہ جو راز فاش کرتا ہے، ایسی خبر پھیلانے والا شخص جو باعث تکلیف ہو، یا وہ جو بیہودہ یا شرمناک باتوں کا چرچا کرتا ہے"۔ غیب گو ایسا شخص ہوتا ہے جو لوگوں کے بارے میں معلومات حاصل کرتا ہے اوراِس معلومات کو دوسروں پر ظاہر کرنا شروع کر دیتا ہے جِس کو جاننے سے دوسروں کو کوئی سروکار نہیں ہوتا۔ غیب گوئی معلومات کو اُس کے ارداہ سے منتقل کرنے سے مختلف ہے۔ غیب گو کا مقصد دوسرے لوگوں کو بُرا ظاہر کر کے اپنے آپ کو بہتر ثابت کرنا اور اپنے آپ کو علم کے خزانے کے طور پر زیادہ سے زیادہ سرفراز کرنا ہوتا ہے۔

روم کے نام خط میں، پولُس انسان کی گناہ آلودہ فطرت اور لاقانونیت کو ظاہر کرتا ہے، اور بیان کرتا ہے کہ خُدا نے اپنا غضب اُن لوگوں پر کیسے نازل کیا جنہوں نے اُس کے قوانین کو ردّ کیا۔ کیونکہ وہ خُدا کی ہدایت اور رہنمائی سے دُور ہو چکے تھے، اِس لئے خُدا نے بھی اُن کو گناہ آلودہ فطرت میں چھوڑ دیا۔ گناہوں کی فہرست میں غیب گوئی یعنی غیبت اور بدگوئی بھی شامل ہیں (رومیوں پہلا باب آیات 29 تا 32)۔ ہم اِس حوالے سے دیکھتے ہیں کہ غیب گوئی کا گناہ کتنا سنجیدہ ہے اور یہ اُن لوگوں کی خصلت بیان کرتا ہے جو خُدا کے غضب کے ماتحت ہیں۔

ایک اور گروہ جو غیب گوئی کے عادی کے طور پر جانا جاتا تھا(اور آج بھی جانا جاتا ہے) بیوہ عورتیں ہیں۔ پولُس رسول بیواؤں کو غیب گوئی کی عادت میں پڑنے اور سُست ہونے کے خلاف خبردار کرتا ہے۔ یہ عورتیں بک بک کرنے اور اوروں کے کام میں دخل دینے اور ناشائستہ باتیں کرنے" کے طور پر بیان کی گئی ہیں (پہلا تھِمُتھِیُس باب 5 آیات 12 تا 13)۔ کیونکہ عورتیں ایک دوسرے کے گھر میں بہت زیادہ وقت خرچ کرتی اور دوسری عورتوں کے ساتھ مل کر کام کرتی ہیں، وہ ایسی صورتحال کا مشاہدہ کرتی اور اُن کے بارے میں سُنتی ہیں جو بِگڑ سکتی ہیں ،خاص طور پر جب اُنہیں بار بار دہرایا جاتا ہے۔ پولُس بیان کرتا ہے کہ بیواؤں کو گھر گھر پھرنے کی عادت پڑ جاتی ہے، اور وہ بیکار رہنے کی کوشش کرتی ہیں۔ کاہل ہاتھ شیطان کا کارخانہ ہوتے ہیں، اور خُدا کاہلی اور سُستی کو ہماری زندگیوں میں داخل کرنے کے خلاف خبردار کرتا ہے۔ "جو کوئی لُتراپن (غیب گوئی) کرتا پھرتا ہے راز فاش کرتا ہے اِس لئے تُو مُنہ پھٹ سے کچھ واسطہ نہ رکھ" (امثال باب 20 آیت 19)۔

عورتیں یقینی طور صرف غیب گو نہیں ہیں۔ کوئی بھی شخص اعتماد میں سُنی گئی بات کو دہرانے سے غیب گوئی میں مُبتلا ہو سکتا ہے۔امثال کی کتاب میں ایسی آیات کی لمبی فہرست پائی جاتی ہے جو غیب گوئی اور ممکنہ تکلیف کے خطرات کو آڑے ہاتھوں لیتی ہے جو غیب گوئی کے نتیجہ میں پیدا ہوتے ہیں۔ "اپنے پڑوسی کی تحقیر کرنے والا بے عقل ہے لیکن صاحبِ فہم خاموش رہتا ہے۔ جو کوئی لُتراپن کرتا پھرتا ہے راز فاش کرتا ہے لیکن جِس میں وفا کی رُوح ہے وہ راز دار ہے" (امثال باب 11 آیات 12 تا 13)۔

بائبل ہمیں بتاتی ہے کہ "کج رَو آدمی فتنہ انگیز ہے اور غیبت کرنے والا دوستوں میں جُدائی ڈالتا ہے" (امثال باب 16 آیت 28)۔ بہت سی دوستیاں ایسی غلط فہمیوں کی وجہ سے برباد ہو جاتی ہیں جو غیب گوئی سے شروع ہوتی ہیں۔ اِس طرح کا رویہ رکھنے والے لوگ دوستوں میں پریشانی ، غصہ، تلخی، اور تکلیف پیدا کرنے کے علاوہ کچھ نہیں کرتے۔ افسوس، کچھ لوگ اور آگے بڑھ جاتے ہیں اور دوسروں کو برباد کرنے کے مواقع تلاش کرتے رہتے ہیں۔ اورجب ایسے لوگوں کا سامنا کیا جاتا ہے، تو وہ الزامات سے انکار کرتے ہیں اور بہانوں اور تاویلات کے ساتھ جواب دیتے ہیں۔ غلطی کو قبول کرنے کی بجائے، وہ کسی اور پر الزام لگاتے ہیں یا غلطی کی متانت کو کم کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ "احمق کا مُنہ اُس کی ہلاکت ہے اور اُس کے ہونٹ اُس کی جان کے لئے پھندا ہیں۔ غیبت گو کی باتیں لذیذ نوالے ہیں اور وہ خُوب ہضم ہو جاتی ہیں" (امثال باب 18آیات 7تا 8)۔

جو اپنے مُنہ اور اپنی زُبان کی نگہبانی کرتا ہے اپنی جان کو مصیبتوں سے محفوظ رکھتا ہے (امثال باب 21 آیت 23)۔ لہذہ، ہمیں اپنی زُبانوں کی نگہبانی اور غیب گوئی کے گناہ آلودہ عمل سے بچنا چاہیے۔ اگر ہم اپنی قدرتی خواہشات کو خُداوند کے تابع کرتے ہیں، تو وہ ہمیں راست رہنے میں مدد فراہم کرے گا۔ خُدا کرے ہم سب اپنے مُنہ کو بند کرتے ہوئے جب تک کہ بولنا ضروری اور مناسب نہ ہو،غیب گوئی پر بائبل کی تعلیمات کی فرمانبرداری کریں۔

English



اردو ہوم پیج میں واپسی



بائبل غیب گو( گپ شپ کرنے والے)کے بارے میں کیا فرماتی ہے؟