"متی اور لوقا میں موجود یسوع مسیح کے نسب ناموں میں اتنا فرق کیوں ہے؟



سوال: "متی اور لوقا میں موجود یسوع مسیح کے نسب ناموں میں اتنا فرق کیوں ہے؟

جواب:
بائبل میں یسوع مسیح کا نسب نامہ دو جگہ پر دیا گیا ہے، متی کے پہلے باب، اور لوقا۲۳:۳۔۳۸ میں ۔ متی ابرہام سے یسوع تک نسب نامہ پیش کرتا ہے۔ جبکہ لوقا نسب نامہ کو یسوع سے آدم تک پیش کرتا ہے۔ تاہم، اِس بات پر یقین کرنے کی اچھی وجہ ہے کہ متی اور لوقا بالکل فرق نسب نامے پیش کر رہے ہیں۔ مثال کے طور پر، متی یعقوب کو یوسف کا باپ بیان کرتاہے (متی۱۶:۱) جبکہ لوقا کے مطابق یوسف کے باپ کا نام عیلی ہے (لوقا۲۳:۳)۔ متی نسب نامہ کو داؤد کے بیٹے سلیمان سے لیتا ہے (متی۶:۱)، جبکہ لوقا داؤد کے بیٹے ناتن سے لے رہا ہے (لوقا۳۱:۳)۔ حقیقت میں داؤد اور یسوع کے درمیان نسب نامہ میں صرف دو ہی نام سیالتی ایل اور زُربابل ہیں جو مشترک ہیں (متی۱۲:۱؛لوقا۲۷:۳)۔

بعض لوگ اِن اختلافات کو بائبل میں غلطیوں کے طور پر ثابت کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ تاہم یہودی لوگ بائبل کے ریکارڈ، خاص طور پر نسب ناموں کو محفوظ رکھنے میں بہت محتاط تھے۔ یہ بات ناقابلِ یقین ہے کہ متی اور لوقا ایک ہی شجرہ نسب کو مکمل طور پر دو متضاد نسب ناموں کے طور پر پیش کریں۔ جیسے کہ پہلے بھی ذکر کر چکے ہیں کہ داؤد سے یسوع تک نسب نامے بالکل مختلف ہیں۔ حتی کہ سیالتی ایل اور زُربابل کے حوالہ جات بھی ایک جیسے ناموں کے دو مختلف اشخاص کو پیش کرتے ہیں۔ متی یکونیاہ کو سیالتی ایل کا باپ بتا تا ہے جبکہ لوقا کے مطابق سیالتی ایل کے باپ کا نام نیری ہے۔ سیالتی ایل نام کے آدمی کے لیے یہ عام سی بات ہو گی کہ وہ اپنے بیٹے زُربابل کا نام مشہور افراد کے نام پر رکھے (دیکھیں عزرا اور نحمیاہ کی کتابیں)۔

کلیسیاء کےمورخ یوسیبیس کی طرف سے ایک وضاحت بیان کی گئی ہے ، کہ متی بنیادی شجرہ نسب، یا حیاتاتی طور پر، شجرہ نسب بیان کر رہا ہے جبکہ لوقا نسب نامہ کو "ازدوجی قانون" کے مطابق پیش کر رہا ہے۔ اِس قانون کے مطابق اگر کوئی شخص بے اولاد مر جاتا تھا تو یہودی رواج کے مطابق مرحوم کا بھائی بیوہ سے شادی کرتا اور اُس سے فرزندِ نرینہ پیدا کرتا ، جومرحوم کے نام کو زندہ رکھتا تھا۔ یوسیبیس کے نظریہ کے مطابق ملکی (لوقا۲۴:۳) اور متان (متی۱۵:۱) کی شادی دو مختلف اوقات میں ایک ہی عورت (روایتی نام استھا) سے ہوئی۔ اور اِسی طرح عیلی (لوقا۲۳:۳) اور یعقوب (متی۱۵:۱) سوتیلے بھائی تھے۔ عیلی بے اولاد مر گیا، لہذہ اُس کے سوتیلے بھائی یعقوب نے عیلی کی بیوہ سے شادی کر لی جس سے یوسف پیدا ہوا۔ اِس کے مطابق یوسف "عیلی " کا قانونی طور پر بیٹا، جبکہ یعقوب کا حیاتاتی طور پر حقیقی بیٹا ٹھہرا۔ اِس طرح متی اور لوقا دونوں ایک ہی نسب نامہ (یوسف کے نسب نامہ) کو ریکارڈ کر رہے ہیں، لوقا قانونی شجرہ نسب کو، جبکہ متی حیاتاتی یعنی حقیقی شجرہ نسب کو اختیار کرتا ہے۔

آج بائبل کے زیادہ تر قدامت پسند ماہرین ایک متفرق نظریہ کے حامی ہیں۔ اِن کے مطابق لوقا مریم کے شجرہ نسب کو جبکہ متی یوسف کے شجرہ نسب کو بیان کر رہا ہے۔ متی داؤد کے بیٹے سلیمان سے یوسف (یسوع کے قانونی باپ) کے شجرہ نسب کو پیش کر تا ہے ، جبکہ لوقا داؤد کے بیٹے ناتن سے مریم (یسوع کی ماں) کے شجرہ نسب کو پیش کرتا ہے۔ چونکہ "داماد" کے لیے کوئی یونانی لفظ نہیں تھا، اِس لیے یوسف عیلی کی بیٹی مریم سے شادی کرنے کی وجہ سے "عیلی کا بیٹا" کہلایا۔ یسوع یوسف یا مریم سے داؤد کی نسل ہے او ر اِس لیے مسیح ہونے کا اہل بھی ہے۔ عورت کی طرف سے نسب نامہ پیش کرنا غیر معمولی ہے، لیکن چونکہ یسوع کنواری سے پیدا ہوا اِس لیے لوقا مریم کا شجرہ نسب بھی بیان کرتا ہے۔ لوقا کی وضاحت یہی تھی ، "جیسا کہ سمجھا جاتا تھا" یسوع یوسف کا بیٹا ہے (لوقا۲۳:۳)۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



"متی اور لوقا میں موجود یسوع مسیح کے نسب ناموں میں اتنا فرق کیوں ہے؟