"کیا خُدا اب بھی معجزات کرتا ہے؟



سوال: "کیا خُدا اب بھی معجزات کرتا ہے؟

جواب:
بہت سے لوگ چاہتے ہیں کہ خُدا اپنے آپ کو اُن پر "ثابت" کرنے کے لیے معجزات کرے۔ "اگر خُدا کوئی معجزہ، نشان، یا عجیب کام کرے تب میں ایمان لا ؤں گا" یہ خیال کلامِ خُدا کے منافی ہے۔ جب خُدا نے بنی اسرائیل کے لیے حیران کُن اور قدرت سے بھرے معجزات کئے، کیا وہ خُدا کے تابع ہوئے؟ نہیں، اگرچہ اسرائیلیوں نے تمام معجزات دیکھے تو بھی ہمیشہ خُدا کے خلاف بغاوت کی اور نافرمانی کی ۔ یہی وہ لوگ ہیں جنہوں نے خُدا کو بحرِ قلزم کو دو حصے کرتےدیکھا، تو بھی بعد میں شک کرنےلگے کہ آیا خُدا مُلکِ موعودہ کے باشندوں کو فتح کرنے کے قابِل ہے یا نہیں۔ اِس حقیقت کی وضاحت لوقا ۱۹:۱۶۔۳۱ میں کی گئی ہے۔ کہانی میں بتایا گیا ہے کہ عالم ارواح میں ایک شخص ابرہام سے درخواست کرتا ہے کہ وہ لعزر کو اُس کے بھائیوں کو خبردار کرنے کے لیے واپس بھیجے۔ ابرہام نے اُس شخص کو بتایا کہ " جب وہ مُوسٰی اور نبیوں ہی کی نہیں سُنتے تو اگر مُردوں میں سے کوئی جی اُٹھے تو اُس کی بھی نہیں مانیں گے" (یوقا۳۱:۱۶)۔

یسوع نے بے شُمار معجزات کئے، پھر بھی بہت سے لوگ اُس پر ایمان نہ لائے۔ اگر خُدا آج بھی معجزات کرے جیسے وہ ماضی میں کرتا تھاتو نتیجہ یہی ہو گا۔ لوگ حیران ہوں گے اور خُدا پر مختصر وقت کے لیے ایمان لائیں گے۔ یہ ایمان سطحی ہو گا اور جب کوئی غیر متوقع اور خوفزدہ واقع ہوگا تو اُسی لمحہ ختم ہو جائے گا۔ معجزات پر مبنی ایمان پختہ ایمان نہیں ہوتا۔ خُدا نے ہمیشہ کے لیے ایک عظیم "خُدائی معجزہ" کر دیا کہ یسوع مسیح ہمارے گناہوں کی خاطر صلیب پر مرنے کے لیے انسانی شکل میں زمین پر آ گیا (رومیوں۸:۵) تاکہ ہم نجات پا سکیں (یوحنا۱۶:۳)۔ خُدا اب بھی معجزات کرتا ہے جن میں سے بہت سے معجزات کو یا تو رد کر دیا جاتا ہے یا پھر نظر انداز۔ تاہم ہمیں مزید معجزات کی ضرورت بھی نہیں ہے۔ ضرورت اِس بات کی ہے کہ ہم یسوع مسیح پر ایمان لا کر نجات کے معجزہ کو حاصل کریں۔

معجزات کا مقصد معجزات دِکھانے والے کی تصدیق کرنا تھا۔ اعمال ۲۲:۲ بیان کرتی ہے، "اے اِسرائیلیو! یہ باتیں سُنو کہ یسوع ناصری ایک شخص تھا جس کا خُدا کی طرف سے ہونا تُم پر اُن معجزوں اور عجیب کاموں اور نشانوں سے ثابت ہوا جو خُدا نے اُس کی معرفت تُم میں دِکھائے۔ چنانچہ تُم آپ ہی جانتے ہو"۔ یہی باتیں رسولوں کے بارے میں بھی کہیں گئیں "رسول ہونے کی علامتیں کمال صبر کے ساتھ نشانوں اور عجیب کاموں اور معجزوں کے وسیلہ سے تُمہارے درمیان ظاہر ہوئیں" (۲۔کرنتھیوں۱۲:۱۲)۔ انجیل کے بارے میں عبرانیوں ۴:۲ بیان کرتی ہے ، "اور ساتھ ہی خُدا بھی اپنی مرضی کے مُوافق نشانوں اور عجیب کاموں اور طرح طرح کے معجزوں اور رُوح القدس کی نعمتوں کے ذریعہ سے اُس کی گواہی دیتا رہا"۔ بائبل مقدس میں ہمارے پاس مسیح کی سچائی موجود ہے۔بائبل میں ہمارے پاس رسولوں کی دستاویزات بھی موجود ہیں ۔ جیسا کہ بائبل میں لکھا ہے مسیح یسوع اور اُس کے رسول ہمارے ایمان کی بنیاد اور کونے کے سرے کے پتھر ہیں (افسیوں۲۰:۲)۔ اِس معفوم میں، معجزات کی مزید ضرورت نہیں ہے، کیونکہ مسیح اور اُسکے رسولوں کے پیغام کی پہلے ہی تصدیق ہو گئی ہے اور وہ بائبل میں درستگی سے محفوظ کر دیئے گئے ہیں۔ جی ہاں، خُدا اب بھی معجزات کرتا ہے۔ لیکن اب ہمیں ویسے معجزات کی توقع کرنے کی ضرورت نہیں ہے جیسے بائبل کے وقت ہوا کرتے تھے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



"کیا خُدا اب بھی معجزات کرتا ہے؟