خُدا نے شیطان اور بدروحوں کو گناہ کرنے کی اجازت کیوں دی؟


سوال: خُدا نے شیطان اور بدروحوں کو گناہ کرنے کی اجازت کیوں دی؟

جواب:
خُدا انسانوں اور فرشتوں دونوں کو مرضی کرنے کا حق دیتا ہے۔ اگرچہ بائبل شیطان اور گرائے گئے فرشتوں کی بغاوت کے بارے میں بہت زیادہ تفصیل نہیں دیتی، ایسا لگتا ہے کہ شیطان غالباً تمام فرشتوں میں بڑا تھا (حزقی ایل 18-12:28) جِس نے تکبر میں خُدا کی مانند بننے کے لئے خُدا کے خلاف بغاوت کی۔ شیطان (لُوسیفر) خُدا کی پرستش نہیں کرنا چاہتا تھا، نہ ہی خُدا کے طابع رہنا چاہتا تھا، بلکہ وہ خُود خُدا بننا چاہتا تھا (یسعیاہ 14-12:14)۔ مکاشفہ 4:12 کو تہائی فرشتوں کی علامی زُبان سمجھا جاتا ہے جنہوں نے شیطان کی بغاوت میں اُس کی پیروی کرنے کا انتخاب کیا، یہی گرائے گئے فرشتے بدروحیں ہیں۔

تاہم انسانوں کے برعکس فرشتوں کے پاس مرضی کرنے کا حق جس سے وہ شیطان کی پیروی کرتے یا خُدا کے ساتھ وفادار رہتے ابدی مرضی کا حق تھا۔ بائبل گرائے گئے فرشتوں کو توبہ کرنے یا اُن کو گناہوں کی معافی کا موقع فراہم نہیں کرتی۔ اور نہ ہی بائبل بیان کرتی ہے کہ پاک فرشتوں کے لئے مزید گناہ کرنا ممکن ہے۔ جو فرشتے خُدا کے ساتھ وفادار رہے اُن کو "برگزیدہ فرشتوں" کے طور پر بیان کیا گیا ہے (1تھِمُتھیُس21:5)۔ شیطان اور گرائے گئے فرشتے خُدا اور اُس کے تمام جلال کے بارے میں واقف تھے۔ جو کچھ وہ خُدا کے بارے میں جانتے تھے اُس کے باوجود اُن کے لئے بغاوت کرنا نہایت بُرائی کا کام تھا۔ نتیجہ کے طور پر خُدا نے شیطان اور دوسرے گرائے گئے فرشتوں کو توبہ کرنے کا موقع نہیں دیا۔ اِس کے علاوہ ، بائبل یقین کرنے کی کوئی وجہ نہیں دیتی کہ وہ توبہ کریں گے چاہے خُدا اُن کو موقع دے بھی دے (1پطرس 8:5)۔ خُدا نے شیطان اور فرشتوں کو ویسی ہی مرضی دی جیسے آدم اور حوا کو دی، جس سے وہ خُدا کی فرمانبرداری کر سکتے تھے اور انکار بھی کر سکتے تھے، فرشتوں کو آزاد مرضی دی گئی کہ وہ جو چاہیں کریں۔ خُدا نے فرشتوں میں سے کسی کو بھی گناہ کرنے کے لئے مجبور نہیں کیا نہ اُن کی حوصلہ افزائی کی۔ شیطان اور گرائے گئے فرشتوں نے اپنی آزاد مرضی پر گناہ کیا ، اِس لئے اب آگ کی جھیل میں خُدا کےابدی غضب کے لائق ہیں۔

جب خُدا جانتا تھا کہ نتیجہ کیا ہو گا تو خُدا نے فرشتوں کو آزاد مرضی کیوں دی؟ خُدا جانتا تھا کہ تہائی فرشتے اُس کے خلاف بغاوت کریں گے اور ابدی آگ کی لعنت کے وارث ہوں گے۔ خُدا یہ بھی جانتا تھا کہ شیطان انسان کو گناہ کی آزمائش میں ڈال کر اپنی بغاوت کو مزید آگے بڑھائے گا۔ لہذہ، خُدا نے ایسا کیوں ہونے دیا؟ بائبل واضح طور پر اِس سوال کا جواب نہیں دیتی۔ ایسا سوال کسی بھی بُرائی کے بارے میں پوچھا جا سکتا ہے۔ خُدا کیوں ہونے دیتا ہے؟ آخر میں خُدا کی حاکمیت پر آ جاتے ہیں۔ زبور نویس فرماتا ہے، "لیکن خُدا کی راہ کامل ہے" (زبور 30:18)۔ اگر خُدا کی سب راہیں "کامل" ہیں تو ہم ایمان رکھ سکتے ہیں کہ جو کچھ وہ کرتا ہے، اور جو کچھ وہ ہونے دیتا ہے، سب کامل ہے۔ لہذہ، گناہ کی اجازت دے دینا بھی ہمارے کامل خُدا کا کامل منصوبہ ہے۔ ہمارا ذہن خُدا کا ذہن نہیں ہے، نہ ہی ہماری راہیں اُس کی راہیں ہیں، جیسا کہ وہ یسعیاہ 9-8:55 میں فرماتا ہے۔

English
اردو ہوم پیج میں واپسی
خُدا نے شیطان اور بدروحوں کو گناہ کرنے کی اجازت کیوں دی؟