کیلون نامی قسیس کا مشرب بمقابلہ ارمنی نامی قسیس کام شرب ان دونوں کے نظریوں میں سے کونسا نظریہ صحیح ہے؟



سوال: کیلون نامی قسیس کا مشرب بمقابلہ ارمنی نامی قسیس کام شرب ان دونوں کے نظریوں میں سے کونسا نظریہ صحیح ہے؟

جواب:
کیلون نامی قسیس کا مشرب اور ارمنی نامی قسیس کا مشرب یہ دو علم الہی کے اصول ہیں جو نجات کے معاملہ میں خدا کی حکومت اور انسان کی ذمہ داری کے درمیان تعلقات کو سمجھانے کی کوشش کرتےہیں۔ کیلوینزم جان کیلون کا اصول ہے جو ایک فرانسیسی تھا اور وہ الہی علم کا ماہر تھا۔ اس کی پیدائش 1509 میں ہوئی تھی اور اس کی موت 1564 میں ہوئی آرمینیئزم، جیکبس آرمینیس کا اصول ہے جو ڈچ کا رہنے والا تھا۔ وہ بھی الہی علم کا ایک ماہر تھا اس کی پیدائش 1560میں ہوئی تھی اور اس کی موت 1609 میں ہوئی۔

دونوں کے اصولوں کو پانچ باتوں میں تشریح کی جاسکتی ہے کیلون کے اصول کے تحت انسان پوری طرح سے سیاہ کاری سے متاثر ہونا بیان کرتا ہے کہ کسی بھی پہلو سے دیکھا جائے تو انسانیت گناہ کے ذریعہ بگڑی ہوئی حالت میں ہے۔ اس لئے بنی انسان کو اپنی طاقت سے خدا کے پاس آنے کی اوقات نہیں ہے۔ جزوی طور سے انسان کا سیاہ کار ہونا بیان کرتا ہے کہ انسانیت کا ہر ایک پہلو گناہ سے داغدار یا ملوث ہے۔ مگر اس حدتک نہیں کہ بنی انسان اپنی باہمی رضامندی سے خدا پر ایمان نہیں لا سکتا۔ اس بات کو نوٹ کریں کہ قدیم رومی اور یونانی زمانہ کے ارمنی اصول کے ماننے والے جزوی طور سے بنی انسان کے سیاہ کار ہونے کا انکار کرتے ہیں اور کیلون کے اصول کے نظریہ سے بہت قریب ہیں جو یہ کہتا ہے کہ بنی انسان "پوری طرح سے سیاہ کاری سے علت پذیر ہے"۔ (حالانکہ یہ حد اور سیاکاری کا مطلب ارمنی اصول کے دائروں میں بحث کی جاتی ہے)۔ عام طور سے کہا جائے تو ارمنی اصول کے ماننے والے یہ اعتقاد کرتے ہیں کہ انسان کا پوری طرح سے سیاکار ہونے کی حالت اور نجات کے بیچ ایک "درمیانی" ہے۔ ایسی حالت میں سابق فضل کے ذریعہ یہ ممکن کر دیا گیا ہے کہ ایک گنہ گار کو مسیح کے پاس کھینچ لیا جاتا ہے اور اس کے پاس خدا کی عطا کردہ قابلیت ہے کہ نجات کا چناؤ کرے۔ کیلون کا اصول اس اعتقاد کو شامل کرتا ہے کہ چناؤ بنا کسی شرط کے ہے۔ جبکہ ارمنی اصول کے ماننے والے شرط کے ساتھ چناؤ پر اعتقاد کرتے ہیں۔ بنا شرط کا چناؤ ایک ایسا نظریہ ہے کہ خدا کسی کو نجات کے لئے بلاتا اور چنتا ہے جس کی بنیاد پوری طرح سے خدا کی مرضی پر ٹکی ہے۔ انفرادی طور سے اس چناؤ میں کوئی ذاتی قابلیت کو نظر انداز کیا گیا ہے۔ بشرطیکہ چناؤ بیان کرتا ہے کہ نجات کے لئے خدا کا انفرادی چناؤ خدا کی علم پیشین کی بنیاد پر ہے کہ نجات کے لئے کون مسیح پر ایمان لائے گا۔ مگر جہاں شرط کے ساتھ چناؤ کی بات آتی ہے تو انسان انفرادی طور سے خدا کو چنتا ہے۔

کیلون کا اصول کفارہ کو ایک محدود طریقہ سے دیکھتاہے۔ جبکہ ارمنی اصول اس کو ایک غیر محدود طریقہ سے دیکھتا ہے۔ یہ پانچ باتوں میں سب سے زیادہ بحث کا معاملہ ہے۔ محدود کفارہ کا اعتقاد یہ ہے کہ کچھ چنے ہوئے لوگوں کے لئے ہی یسوع صلیب پر مرا تھا۔ جبکہ غیر محدود کفارہ کا اعتقاد اس طرح ہے کہ یسوع سب کے لئے مرا، مگر اس کی موت تب تک اثرکارک نہیں ہے جب تک کہ ایک شخص اس کو ایمان کے ساتھ قبول نہ کر لے یا اسے حاصل نہ کر لے۔

کیلون کا اصول اس اعتقاد کو شامل کرتاہے کہ خدا کا فضل ناقابل مزاہمت ہے جبکہ ارمنی اصول کہتا ہے کہ ایک شخص خدا کے فضل کو روک سکتا ہے، اس کی مزاہمت کر سکتا ہے۔ نا قابل مزاہمت فضل بحث کرتا ہے کہ جب خدا نجات کے لئے ایک شخص کو بلاتا ہے تو وہ شخص نا گزیر طریقہ سے نجات کے لئے آتا ہے۔ جبکہ مزاہمت کا فضل بیان کرتا ہے کہ خدا سب کو فضل کے لئے بلاتا ہے مگر بہت سے لوگ اس بلاہٹ کو روکتے اور اس کا انکار کرتے ہیں۔

کیلون کا اصول خدا کے بزرگوں کے نجات کی ثابت قدمی کو مانتی ہے جبکہ ارمنی کا اصول ایک شرطیہ نجات پر زور دیتی ہے۔ بزرگوں کی ثابت قدمی اس تصور کا حوالہ دیتی ہے کہ ایک شخص جس کا خدا کی طرف سے چناؤ ہوا ہے وہ اپنے ایمان میں ثابت قدم رہے گا اور وہ مستقل طور سے مسیح کا انکار نہیں کرے گا یا اس سے منہ پھیرے گا۔ شرطیہ نجات کا نظریہ یہ ہے کہ مسیح میں ایک ایمندار چاہے وہ مرد ہو یا عورت اپنی مرضی سے دور ہو سکتا ہے اور اپنی نجات کو کھو سکتا ہے۔ اس بات کو نوٹ کریں کہ کئی ایک ارمنی اصول کے ماننے والے شرطیہ نجات کا انکار کرتے اور اس کے بدلے میں ابدی محافظت پر ایمان رکھتے ہیں۔

سو کیلون کا اصول بمقابلہ ارمنی اصول کے بحث میں کون صحیح ہے؟ یہ نوٹ کرنے میں دلچسپ ہے کہ مسیح کے جسم کے اختلاف میں کیلون کے اصول اور ارمنی اصول دونوں کا آمیزش پایا جاتا ہے۔ کیلون کے اصول کی 5 باتیں اور ارمنی کے اصول کی پانچ باتیں، اس کے ساتھ ہی کیلون کے اصول سے لی ہوئی دیگر تین باتیں اور ارمنی کے اصول سے لی ہوئی دیگر دو باتیں ہیں۔ کئی ایک ایماندار دو نظریوں کے کچھ آمیزش کو لے کر چرچا کرتے ہیں۔ آخر کار یہ ہمارا نظریہ ہے کہ دونوں نظام اس مدعے پر آکر نا کام ہو جاتے ہیں جب وہ بے سمجھائی ہوئی بات کو سمجھانے کی کوشش کرتے ہیں۔ بنی آدم ایک تصور کو پوری طرح سے پکڑ پانے میں نا قابل ہوتے ہیں جیسا کہ یہ ایمان کہ خدا سب سے اعلی برتر و بالا اور سب چیزوں کا علم رکھنے والا عالم کل اور عالم الغیب ہے۔ جی ہاں! بنی آدم اس لئے بلائے گئے ہیں کہ نجات کے واسطے مسیح پر ایمان رکھنے کے لئے ایک حقیقی فیصلہ کرے۔ یہ دو سچائیاں ہمارے لئے ایک تردیدی نظر آتے ہیں مگر خدا کی حکمت میں یا اس کی نظر میں ایک کامل منشا کو انجام دیتے ہیں۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



کیلون نامی قسیس کا مشرب بمقابلہ ارمنی نامی قسیس کام شرب ان دونوں کے نظریوں میں سے کونسا نظریہ صحیح ہے؟