کیا بائبل میں غلطیاں، تخالف، یا اختلاف پائے جاتے ہیں؟



سوال: کیا بائبل میں غلطیاں، تخالف، یا اختلاف پائے جاتے ہیں؟

جواب:
اگر ہم بائبل کو سرسری نظر سے، پہلے سے قیاس کئے بنا، بیجا طرفداری کے غلطیاں ڈھونڈنے کی نیت سے پڑھتے ہیں تو ہم اس کی چسپیدہ مشتمل اور نسبتا سمجھنے میں آسان کتاب پائیں گے۔یہ بات تو ہے کہ اس میں مشکل عبارتیں پائی جاتی ہیں۔ جی ہاں! کچھ آیتیں ہیں جس سے ظاہر ہوتاہےکہ یہ ایک دوسرے کے اختلاف میں ہیں۔ مگر ہمیں یاد رکھنا چاہئے کہ بائبل قریب قریب 40 مصننوں کے ذریعہ 1500 سال کے دور سے لکھا گیا ہے۔ ہر ایک لکھنے والے نے فرق انداز سے، فرق اسلوب بیان سے، فرق ظاہر تناسب سے، ایک فرق سامعین کے لئے ایک فرق مقصد کو لے کر لکھا۔ اس لئے کچھ چھوٹے اختلافوں کا توقع کیا جانا چاہئے۔ کسی طرح ایک چھوٹا سافرق تخالف میں شامل نہیں کیا جاتاکیونکہ یہ صرف ایک چھوٹی سی غلطی ہے جسے نظر انداز کیا جا سکتا ہے۔ اگر بالکل سےکوئی قابل فہم طریقہ نہیں ہےکہ آیتوں یا عبارتوں کو دوبارہ سے جوڑا جا سکے، یہاں تک کہ اگر ایک جواب بھی اسی وقت دستیاب نہ ہو تو اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ایک جواب کا وجود نہیں ہے۔ بہتوں نےبائبل میں تاریخ یا جغرافیہ سے متعلق مفروضہ غلطی پایا ہے صرف یہ دیکھنے کے لئےکہ بائبل کسی زمانہ کے آگے کے آثار قدیمہ ثبوتوں کی دریافت کرنے میں صحیح ہے کہ نہیں۔

ہم اکثر اس طرح کے جملوں کے ساتھ سوالات حاصل کرتے ہیں جیسے کہ "سمجھائیے کہ کس طرح یہ آیتیں تخالف نہیں کرتیں" یا یہ کہ "دیکھو بائبل میں یہ غلطی ہے"! بے شک و شبہ کچھ باتیں ہیں جو لوگ پوچھا کرتے ہیں اورانکا جواب دینا مشکل ہو جاتاہے۔ کسی طرح ان مفروضہ تخالف اور غلطیوں کے لئے ہماری جد و جہد ہے کہ دانائی اور معقول طریقہ سے دیئے گئے جواب دستیاب کئے جائیں۔ جب کہ بائبل کی تمام "غلطیوں کے لئے کتابیں اور ویب سائٹ کے ذریعہ دیئے جانے والے اشتہارات پہلے ہی سے دستیاب ہیں"۔ اکثر لوگ اپنے مفروضہ غلطیوں کو نہیں ڈھونڈ پاتے۔ کچھ ایسی بھی کتابیں اور ویب سائٹ دسیتاب ہیں جو ان مفروضہ غلطیوں کو جھٹلاتے ہیں۔ سب سے زیادہ افسوس کی بات یہ ہے کہ بہت سے لوگ جو بائبل پر حملہ کرتے وہ جواب میں دلچسپی نہیں رکھتے کیونکہ بہت سے حملہ آور ان جوابوں سے پہلے سے ہی واقف رہتے ہیں مگر وہ وہی پرانے اتھلے جملوں کو بار بار دہرانا جاری رکھتے ہیں۔

سو اگر کوئی بائبل کی غلطی کا الزام لے کر ہمارے پاس پہنچتاہے تو تب ہم کو کیا کرنا چاہئے؟ پہلا ہے دعا کے ساتھ کلام کا مطالعہ کریں اور دیکھیں کہ اگر اس کا کوئی آسان حل نکل آئے۔ دوسرا ہے کچھ اچھی بائبل کی شرح کا منٹری کا استعمال کرتے ہوئے تفتیش کریں، جیسے "بائبل دفاع" کی کتابوں اور بائبل کی تفتیش کے ویب سائٹ وغیرہ کا استعمال کریں تیسرا ہے۔ اپنی کلیسیا کے پادری صاحبان کلیسیا کے رہنماؤں سے پوچھیں کہ وہ ان کا کوئی حل نکال سکتے ہیں۔ چوتھا ہے اس کے باوجود بھی اگر کوئی صاف جواب نہیں نکلتا اور پہلا دوسرا اور تیسرا طریقہ کام نہ آئے تو ان سے صاف کہیں کہ ہم خدا پر بھروسہ کرتے ہیں کہ اس کا کلام سچاہے اور ایک حل یہ ہے جو آسانی اب تک عملی جامہ نہیں پہنایا گیا (2 تموتھیس 2:15؛ 17 -16 : 3)۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



کیا بائبل میں غلطیاں، تخالف، یا اختلاف پائے جاتے ہیں؟