میں خدا سے کس طرح صحیح تعلقات رکھوں؟



سوال: میں خدا سے کس طرح صحیح تعلقات رکھوں؟

جواب:
خدا کے ساتھ "صحیح تعلقات "رکھنے کے لئے سب سے پہلے ہم کو یہ سمجھنا ہوگا کہ کونسی چیز "غلط " ہے۔ اس کا جواب ہے گناہ۔ کوئی بھی ایسا شخص نہیں جو برے کاموں کو انجام دیئے بغیر صرف بھلا کام کرتا ہو، ایک بھی نہیں۔ (زبور 14:3) "ہم نے خدا کے احکام کے خلاف بغاوت کری ہے۔ ہم سب بھیڑوں کی مانند بھٹک گئے" (یسعیاہ 53:6)

بری خبر یہ ہے کہ گناہ کی مزدوری موت ہے۔ "جو جان گناہ کرے گی وہ مرے گی" (حزقی ایل 18:4)۔ اچھی خبریہ ہے کہ ایک محبتی خدا نے ہم کو تلاشا ہے تاکہ ہمارے لئے نجات لے آئے۔ یسوع نے اعلان کیا ہے کہ اس کے دنیا میں آنے کا مقصد کیا ہے۔ اس نے کہا کہ "ابن آدم کھوئے ہوؤں کو ڈھونڈنے اور نجات دینے آیا ہے" (لوقا 19:10)۔ اور جب وہ صلیب پر مرا تو اس نے اپنے آنے کے مقصد کو پورا کیا اور صلیب پر اس کے آخری الفاظ تھے " تمام ہوا" (یوحنا 19:30)۔

خدا سے صحیح رشتہ تب ہی قائم ہوتا ہے جب آپ اپنے گناہ سے واقف کار ہوکر اسے تسلیم کر لیتے ہیں تب اس کے بعد آپ حلیمی سے اپنے گناہ خدا کے سامنے اقرار کرتے ہیں (یسعیاہ 57:15)۔ کیونکہ پولس رسول کہتے ہیں کہ "راستبازی کے لئےایمان لانا دل سے ہو تاہے اور نجات کے لئے اقرار منہ سے کیا جاتا ہے" (اعمال کی کتاب 10:10)۔

یہ توبہ ایمان کے ساتھ ہونا چاہئے۔ خاص طور سے ایمان جو یسوع کی زبیحانہ موت اور معجزانہ قیامت جو اس بات کو ثابت کرتا ہے کہ وہ آپ کا نجات دہندہ ہونے کی قابلیت رکھتا ہے۔ "جس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ "اگر تو اپنی زبان سے یسوع کے خداوند ہونےکا اقرار کرےاور اپنے دل سے ایمان لائے کہ خدا نے اسے مردوں میں سے جلایا تو نجات پائے گا" (رومیوں 10:9)۔ دیگر کئی ایک عبارتیں ایمان کی ضرورت پر زور دیتے ہیں، جیسےکہ یوحنا 20:27؛ رسولوں کے اعمال 16:31؛ گلیتوں 2:16؛ 26، 11 :3 اور افسیوں 2:8۔

خدا کے ساتھ صحیح تعلقات کا رکھا جانا اس بات کو پیش کرتا ہے کہ جو کچھ خدا نے آپ کے لئے کیا ہے اس کے بدلے میں اس کے احسانوں کا جواب آپ کس طرح سے دیتے ہیں یہ اس کا معاملہ ہے۔ اس نے نجات دہندہ کو آپکے لئے بھیجا، آپ کے گناہ اٹھانے کے لئے اس نے کفارہ کی قربانی کا انتظام کیا (یوحنا 1:29)۔ اور وہ آپکے لئے وعدہ پیش کرتا ہے کہ "جو بھی خدا وند کا نام لیگا نجات پائے گا" (اعمال 2:21)۔

توبہ کرنے اور معافی حاصل کرنے کی ایک خوبصورت تمثیل مصرف بیٹے کی تمثیل ہے (لوقا 32-11 :15)۔ چھوٹے بیٹے نے باپ کے انعام کو یعنی کہ جائیداد کے اپنے حصہ کو شرمناک گناہ میں برباد کر ڈالا (آیت 13) جب اس کے برے کاموں کا احساس ہوا تو اس نے واپس گھر جانے کا فیصلہ کیا۔ (آیت 18)۔ اس نے قبول کر لیا تھا کہ وہ آگے کو اپنے باپ کا بیٹا ہونے کے لائق نہیں ہے (آیت19) ۔ مگر وہ غلط تھا۔ باپ نے لوٹے ہوئے باغی بیٹے کو پہلے سے زیادہ پیار کیا (آیت 20)۔ اس کی ساری خطائیں معاف کردیئے گئے اور اس کے لوٹنے کی خوشی میں ایک جشن منایا گیا (آیت 24)۔ خدا اپنے وعدہ میں سچا ہے ساتھ ہی اس کی معافی کا وعدہ بھی سچا ہے۔ "خداوند شکستہ دلوں کے نزدیک ہے اور خستہ جانوں کو بچاتا ہے۔ (زبور 34:18)۔

اگر آپ خدا سے صحیح تعلقات رکھنا چاہتے ہیں تو یہاں پر ایک نمونہ کی دعا ہے۔ یہ دعا یا کوئی اور دعا آپکو نہیں بچائے گی۔ مسیح پر بھروسہ کرنا یہ آپ کو گناہ سے بچا سکتا ہے۔ یہ دعا صرف خدا پر آپکے ایمان کو ظاہر کرنے کا طریقہ ہے اور آپکے نجات کے فراہم کئے جانے کے لئے ایک شکریہ ادا کرنا ہے۔ "اے خدا میں جانتا ہوں کہ میں نے تیرے خلاف گناہ کیاہے۔ اور میں سزا کا حقدار ہوں۔ مگر جس سزا کا میں حقدار تھا اس سزا کو یسوع مسیح نے اٹھا لیا۔ تاکہ میں اس پر ایمان لانے کے ذریعہ معاف کیا جا سکوں۔ نجات کے لئے میں تجھ پر بھروسا کرتا ہوں۔ تیرے اس عجیب فضل اور گناہوں کی بخشش کے لئے اور ہمیشہ کی زندگی کے انعام کے لئے تیرا بے حد شکر گزار ہوں۔ آمین۔

جو بھی کچھ آپ نے یہاں پڑھا ہے اس کی بنیاد پر کیا آپ نے مسیح کے لئے فیصلہ لیا ہے؟ اگر آپکا جواب ہاں میں ہے تو برائے مہربانی اس جگہ پر کلک کریں جہاں لکھا ہے کہ آج میں نے مسیح کو قبول کر لیا ہے۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



میں خدا سے کس طرح صحیح تعلقات رکھوں؟