متبادل کفارہ کیا ہے ؟




سوال: متبادل کفارہ کیا ہے ؟

جواب:
متبادل کے طور ہر مارے جانے کا حوالہ دیتا ہے ۔ کلام ہمیں سکھاتا ہے کہ تمام انسان گناہ گار ہیں (رومیوں 23، 18-3:9) ہمارے گناہوں کی مزدوری موت ہے ۔ رومیوں 6 باب اُسکی 23 آیت پڑھیں، " کیونکہ گناہ کی مزدوری موت ہے ، مگر خُدا کی بخشش ہمارے خداوند یسوع مسیح میں ہمیشہ کی زندگی ہے۔"

یہ آیت ہمیں بہت ساری چیزیں سکھاتی ہے ۔ مسیح کے بغیر ہم مرنے والے ہیں اور جہنم میں اپنے گناہوں کے کفارے کے طو پر ایک ابدی زندگی گزارنے والے ہیں ۔ کلام میں موت ایک "علیحدگی" کا حوالہ دیتی ہے ۔ ہر کوئں مرے گا، لیکن کچھ جنت میں خداوند کے ساتھ ہمیشہ کی زندگی پائیں گے، جبکہ دوسرے جہنم میں ایک ابدی زندگی گزاریں گے۔ یہاں پر موت کو جہنم میں زندگی کہا گیا ہے ۔ تاہم دوسری بات یہ آیت ہمیں سکھاتی ہے کہ ابدی زندگی مسیح یسوع کے وسیلہ سے مل سکتی ہے ۔ یہ اُس کا متبادل کفارہ ہے ۔

مسیح یسوع جب اُسے صلیب پر مصلوب کیا گیا تو وہ ہماری جگہ پر موا ۔ ہم اُس صلیب پر مصلوب ہونے کےحقدار تھے کیونکہ ہم اُن میںسے ایک ہیں جنہوں نے گناہ آلودہ زندگی گزاری ہے ۔ لیکن مسیح نے ہماری جگہ پہ سزا اٹھائی ، وہ ہمارے متابدل کے طور پر اپنے آپ کو پیش کرتا ہے ، اور اُس نے وہ اٹھایا جس کے صحیح ہم حق دار تھے۔ " جو گُناہ سے واقف نہ تھا اُسی کو اُس نے ہمارے واسطے گناہ ٹھہرایا تاکہ ہم اُس میں ہو کر خُدا کی راستبازی میں شامل ہو جائیں ۔(11 کرنتھیوں 5:21)

" وہ آپ ہمارے گناہوں کو اپنے بدن پر لئے ہوئے صلیب پر چڑھ گیا تا کہ ہم گناہوں کے اعتبار سے مر کر راستبازی کے اعتبار سے جئیں اور اُسی کے مارکھانے سے تم نے شفا پائی۔ " یہاں پر ہم دوبارہ دیکھتے ہیں کہ مسیح نے ہمارے گناہ اپنے آپ پر اٹھا لیے اور ہمارے گناہوں کی قیمت ادا کی ۔ چند ایک آیات کے بعد ہم بڑھتے ہیں،" اس لیے کہ مسیح نے بھی یعنی راستباز نے ناراستوں کے لیے گناہوں کے باعث ایک بار دُکھ اٹھایا تاکہ ہم کو خُدا کے پاس پہنچائے ، وہ جسم کے اعتبار سے تو مارا گیا ۔ لیکنروح کے اعتبار سے زندہ کیا گیا۔" ( 1 پطرس 3:18) یہ آیات نہ صرف اس متبادل کے بارے میں سکھاتی ہیں۔ جو مسیح نے ہمارے لئے کیا بلکہ وہ یہ بھی سکھاتی ہیں کہ وہ کفارا تھا ، اِس کا مطلب یہ ہے کہ وہ انسان کے گناہ کی قیمت ادا کرکے مطمیں تھا۔

ایک اور پیرا جو کہ اِس متبادل کفارہ کے بارے میں بات کرتا ہے ۔ یسعیاہ 53:5ہے ۔ یہ آیت آنے والے مسیح کے بارے میں بتاتی ہے جسیے ہمارے گناہوں کی خاطر صلیب پر مرنا تھا۔ نبوت بہت تفصلاً ہے اور صلیب کا واقعہ پہلے سے بیان شدہ تھا۔ " حالانکہ وہ ہماری خطائو ں سببسے گھاءل کیا گیا اور ہامری بدکرداری کے باعث کُچلا گیا۔ ہامری ہی سلامتی کے لیے اُس پر سیاست ہوئں تاکہ اُس کے مار کھانے سے ہم شفا پائیں ۔" اِ س متبادل پر غہور کریں۔ یہاں پر دوبارہ ہم دیکھتے ہیں کہ مسیح نے ہمارے لئے کفارہ ادا کیا۔

ہم اپنے طور پر اپنے گناہوں کا کفارا ادا کرنے کے لیے زمین پر آیا ۔ کیونکہ اُس نے یہ ہمارے لئے کیا، اب ہمارے پاس ناصرف ہمارے گناہوں کی معافی کا موقع ہے بلکہ اُس کے ساتھ ہمیشہ کی زندگی گزارنے کا بھی ہے ۔ ایسا کرنے کی خاطر ہمیں اپنا ایمان اُس پر رکھنا چاہیے جو مسیح نے صلیب پر کیا ۔ ہم اپنے آپ کو نجات نہیں دے سکتے ہیں ، ہمیں ہماری جگہ پر ایک متبادل کی ضرورت ہے مسیح یسوع کی موت متبادل کفارہ ہے ۔



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



متبادل کفارہ کیا ہے ؟