كلامِ مقدس تثليث كے بارے ميں كيا تعليم ديتا هے؟




سوال: كلامِ مقدس تثليث كے بارے ميں كيا تعليم ديتا هے؟

جواب:
مسیحی نقطه نگاه سے سب سے مشکل چیز تثلیث هے جس کو کوئی بھی آسانی سے بیان نهیں کرسکتا۔ تثلیث ایک ایسا بھید هے جس کو مکمل طور پر سمجھنا ایک عام انسان کے لیے بهت مشکل هے، آئیں اس کوعلیحده علیحده بیان کریں۔ خدا هم سب سے لامحدود حد تک بهت بڑا هے۔ اسی لیے هم تصور بھی نهیں کرسکتے که اسے مکمل طور پر سمجھیں۔ کلام مقدس بتاتی هے که خدا باپ هے، یسوع خدا هے، اور پاک روح خدا هے۔ کلام مقدس یه بھی بتاتی هے که خدا صرف اور صرف ایک هے۔ اگرچہ هم تثلیث کے تنیوں اقنوم کے تعلق کو الگ الگ سمجھتے هوئے جان سکتے هیں ایک هی وقت میں، انسانی ذهن کے لیے اسے سمجھنا بهت هی مشکل هے۔ تاهم اس کا یه بھی مطلب نهیں که یه سچ نهیں یا اس کی بنیاد کلام مقدس کی تعلیمات کے مطابق نهیں۔

لفظ تثلیث کو پڑھتے هوئے اس بات کو ذهن میں رکھیں که یه لفظ کلام مقدس میں استعمال نهیں هوا۔ یه ایک محاورا هے جو خدا کی الوهیت کو بیان کرنے کے لیے استعمال کیا گیا ، که یه حقیقت هے که تینوں اقنوم هیں جو همیشه سے موجود هیں جو خدا کی شخصیت کو پورے طور پر مکمل کر تے هیں۔ سمجھنا چاهیے که یه همیں تین خداؤں کی طرف مائل نهیں کرتے۔ تثلیث یه هے که ایک خدا میں یه تین شخصیات هیں اور لفظ تثلیث استعمال کرنا کوئی غلط بات نهیں۔ حالانکه یه لفظ کلام مقدس میں موجود هی نهیں۔ مختصر لفظ تثلیث کهنا اس کے بجائے که تین اقنوم یا تین شخصیات کهنا ایک خدا کے لئے۔ اگر یه آپ کے لئے کسی مشکل کا سبب هے تو اس سمجھئے : لفظ دادا یا نانا کلام مقدس میں کهیں بھی استعمال نهیں هوا۔ پھر بھی هم جانتے هیں که دادے اور نانے کلام مقدس میں موجود تھے۔ ابراهم یعقوب کا دادا تھا۔ اس لیے آپ کو لفظ تثلیث سے اتنا پریشان هونے کی ضرورت نهیں۔ اس کی اصل اهمیت کیا هوگی که تثلیث کا جو تصور کلام مقدس میں بیان کیا گیا هے وه کلام مقدس میں موجود هے۔ دوسرے لفظوں میں اس کا آغاز یوں هو سکتا هے ، کلام مقدس کی آیات میں تثلیث کو واضع طور پر بیان کیا گیا هے۔

پهلا۔ ایک خدا هے﴿استثنا 6باب4آیت؛ 1۔کرنتھیوں8باب4آیت؛ گلتیوں3باب20آیت؛ 1۔تیمتھس2باب5آیت﴾۔

دوسرا۔ تثلیث میں تین اشخاص شامل هیں﴿پیدایش 1باب1آیت؛ 1باب26آیت؛ 3باب22آیت؛ 11باب7آیت؛ یسعیاه 6باب8آیت؛ 48باب16آیت؛ 61باب1آیت؛ متی 3باب16تا17آیت؛ 28باب19آیت؛ 2۔کرنتھیوں13باب14آیت﴾۔ پرانے عهد نامے میں عبرانی کا علم بهت مددگار تھا۔ پیدایش1باب1آیت میں اسم جمع الوهیم استعمال هوا هے۔ پیدایش 1باب26آیت؛ 3باب22آیت؛ 11باب7آیت اور یسعیاه6باب8آیت میں اسم معرفه"هم"استعمال هوا هے۔ یه "الوهیم "اور "هم" ایک سے زیاده کے لیے استعمال هوئے هیں بغیر سوال کے۔ انگریزی میں آپ کے پاس صرف دو هی اشکال ہیں واحد یا جمع، عبرانی میں آپ کے پاس تین اشکال هیں ، واحد ، دوهرااور جمع۔ دوهرا صرف اور صرف دو هی کے لیے هے۔ عبرانی میں دوهری اشکال استعمال هوئی هیں۔ دوهری چیزوں کے لیے جیسے آنکھیں ، کان، هاتھ۔ لفظ "الوهیم"اور اسم معرفه "هم"جمع کی اشکال هیں۔ یه یقینا دو سے زیاده کے لیے هیں۔ اور ان کو تین یا تین سے زیاده کے لیے استعمال کیا جا سکتا هے ﴿باپ، بیٹا، پاک روح﴾۔

یسعیاه 48باب16آیت اور 61باب1آیت میں بیٹا بولتا هے جب باپ یا پاک روح کے بارے میں بات کرتا هے۔ یسعیاه 61باب1آیت کو لوقا 4باب14تا19آیت سے موازنه کریں اور دیکھیں که بیٹا کیا کهتا هے۔ متی 3باب16تا17آیت یسوع مسیح کے بپتسمه کے واقع کو بیان کرتی هے۔ دیکھیں که اس میں خدا پاک روح ، خدا بیٹے کے اوپر اترتا هے جبکه خدا باپ کهتا هے که وه بیٹے سے خوش هے۔ متی 28باب19آیت اور 2۔کرنتھیوں13باب14آیت اس کی مثالیں هیں که تین مختلف اشخاص تثلیث هیں۔

تیسرا۔ تثلیث کے ممبران مختلف جگهوں پر ایک دوسرے سے فرق هیں۔ پرانے عهدنامے میں "خدا"فرق هے"خداوند"﴿پیدایش19باب24آیت؛ هوسیع1باب4آیت﴾۔ خدا کا بیٹا ﴿2زبور7اور12آیت؛ امثال30باب2تا4آیت﴾۔ "پاک روح" "خدا"سے فرق هے ﴿گنتی27باب 18آیت﴾اور"خدا"﴿زبور51باب10تا12آیت﴾۔ خدا بیٹا خدا باپ سے فرق هے ﴿45زبور6تا7آیت؛ عبرانیوں1باب8تا9آیت﴾۔ نئے عهد نامے میں یوحنا14باب16تا17آیت جهاں یسوع سے خدا باپ سے بات کرتا هے که وه پاک روح کو بطور مدد گار بھیجے ۔ یه ظاهر کرتا هے که یسوع مسیح یه نهیں سمجھتا که وه اپنے آپ کو خدا باپ پاک روح نهیں سمجھتا۔ یسوع مسیح انجیل میں بهت سی جگهوں پر خدا کو باپ سمجھتے هوئے بات کرتا هے کیا وه اپنے آپ سے بات کرتا هے؟ نهیں۔ وه تثلیث کی دوسری شخصیت باپ سے بات کرتا هے۔

چوتھا۔ تثلیث کا هر ممبر خدا هے باپ خدا هے﴿یوحنا6باب27آیت؛ رومیوں1باب7آیت؛ 1۔پطرس1باب2آیت﴾، بیٹا خدا هے ﴿یوحنا1باب1اور14آیت؛ رومیوں9باب5آیت؛ کلسیوں2باب9آیت؛ عبرانیوں1باب8آیت؛ 1۔یوحنا5باب20آیت ﴾، پاک روح خدا هے ﴿اعمال5باب3تا4آیت؛ 1۔کرنتھیوں3باب16آیت﴾۔ ایک جو سب میں رهتا هے وه پاک روح هے ﴿رومیوں8باب9آیت؛ یوحنا14باب16تا17آیت؛ اعمال2باب1تا4آیت﴾۔

پانچواں۔ تثلیث میں ماتحتی:کلام مقدس اس بات کو ظاهر کرتا هے که پاک روح باپ اور بیٹے کا ماتحت هے اور بیٹا باپ کا ماتحت هے ۔ یه ان کا آپسی رشته هے اور تثلیث میں شامل شخص دوسرے کی طاقت کو جھٹلا نهیں سکتا۔ مختصر یه وه علاقه هے جس کو همارے محدود خیالات نهیں جان سکتے کیونکه خدا لامحدود هے ۔ بیٹے کے بارے میں دیکھیں لوقا22باب24آیت؛ یوحنا5باب36آیت؛ یوحنا20باب 21آیت؛ 1۔ یوحنا4باب14آیت۔ پاک روح کے بارے میں دیکھیں یوحنا14باب16اور 26آیت؛ 15باب26آیت؛ 16باب7آیت اور خاص طور پر یوحنا16باب13تا14آیت۔

چھٹا۔ تثلیث کے ممبران کا انفرادی کام:باپ هی همارے وجود ذریعه هے۔ ﴿1﴾کائنات﴿1۔کرنتھیوں8باب6آیت؛ مکاشفه4باب11آیت﴾۔ ﴿2﴾خدائی مکاشفه ﴿مکاشفه1باب1آیت﴾۔ ﴿3﴾نجات﴿یوحنا3باب16تا17آیت﴾ اور﴿4﴾یسوع انسانی کام﴿یوحنا5باب17آیت؛ 14باب10آیت﴾، باپ نے هی یه تمام چیزیں بنائی هیں۔

بیٹا وه اهلکار هے جس کے ذریعے باپ مندرجه ذیل کام کرتا هے ﴿1﴾کائنات کی بناوٹ اور دیکھ ریکھ ﴿1۔کرنتھیوں8باب6آیت؛ یوحنا1باب3آیت؛ کلسیوں1باب16تا17آیت۔ ﴿2﴾خدائی مکاشفه ﴿یوحنا1باب1آیت؛ متی11باب27آیت؛ یوحنا16باب12تا15آیت؛ مکاشفه 1باب1آیت﴾اور ﴿3﴾ نجات﴿2۔کرنتھیوں5باب19آیت؛ متی1باب21آیت؛ یوحنا4باب42آیت﴾۔ باپ یه ساری چیزیں بیٹے کے ذریعے کرتا هے جو ایک اهلکار کی طرح کا م کرتا هے۔

پاک روح کے ذریعے خدا مندرجه ذیل کام سرانجام دیتا هے ﴿1﴾کائنات کی بناوٹ اور دیکھ ریکھ ﴿پیدایش 1باب2آیت؛ ایوب26باب13آیت؛ 104زبور30آیت﴾۔ ﴿2﴾خدائی مکاشفه ﴿یوحنا16باب12تا15آیت؛ افسیوں3باب5آیت؛ 2۔پطرس1باب21آیت﴾۔ ﴿3﴾نجات ﴿یوحنا3باب6آیت؛ ططس 3باب5آیت؛ 1۔پطرس1باب2آیت﴾ اور﴿4﴾یسوع مسیح کے کام ﴿یسعیاه 61باب1آیت؛ اعمال10باب38آیت﴾۔ اب باپ یه ساری چیزیں پاک روح کی قوت کے ذریعے سرانجام دیتا هے۔

مشهور تمثیلیں بھی تثلیث کو پورے طور پر بیان کرنے سے قاصر هیں۔ انڈه ﴿یا سیب﴾ اپنے خول میں پورا نهیں هوسکتا، سفیدی یا زردی انڈے کے حصے هیں، نه که اپنے آپ میں انڈه هیں۔ باپ بیٹا اور پاک روح خدا کے حصے نهیں هیں یه سب اپنے آپ میں خدا هیں۔ پانی کی مثال کسی حد تک بهتر مگر پھر بھی تثلیث کو بتانے کے لیے پورے طور پر مکمل نهیں۔ مائع ، بھاپ اور برف پانی کی تین اشکال هیں۔ باپ ، بیٹا اور پاک روح خدا کی اشکال نهیں هیں، بلکه هر ایک خود خدا هے۔ اس لیے یه مثالیں همیں تثلیث کی مکمل تصویر دکھاتی هیں ، یه تصویر پورے طور پر مکمل نهیں هے۔ لامحدود خدا محدود قسم کی مثالوں سے بیان نهیں کیا جا سکتا۔ تثلیث پر غور نه کرتے هوئے اصل میں صرف خد ا کی الوهیت پر نگاه کرنے کی ضرورت هے اور کیونکه خدا کی خدائی همارے وجود سے کهیں زیاده لامحدود هے ،"واه خدا کی دولت اور حکمت اور علم کیاهی عمیق هے اسکے فیصلے کس قدر ادراک سے پرے اور اسکی راهیں کیا هی بے نشان هیں ۔ خداوند کی عقل کو کس نے جانا؟ یاکون اسکا صلاح کار هوا؟ "﴿رومیوں11باب33تا34آیت﴾۔



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



كلامِ مقدس تثليث كے بارے ميں كيا تعليم ديتا هے؟