يسوع كو اپنا شخصي نجات دهنده قبول كرنے كا كيا مطلب هے؟




سوال: يسوع كو اپنا شخصي نجات دهنده قبول كرنے كا كيا مطلب هے؟

جواب:
کیا آپ نے کبھی یسوع مسیح کو اپنا شخصی نجات دهنده قبول کیا؟ اس سے پهلے کے آپ جواب دیں، مجھے اجازت دیں که میں سوال کو بیان کرسکوں۔ اس سوال کو بخوبی سمجھنے کے لیے، آپ کو پهلے یه سمجھنا پڑے گا "یسوع مسیح"، "شخصی"اور "نجات دهنده"۔

یسوع مسیح کون هے؟ بهت سارے لوگ یسوع مسیح کو ایک اچھا انسان مانتے هیں، عظیم استاد، یا خدا کا پیغمبر۔ یه چیزیں یسوع کے لیے نهایت مناسب هیں، لیکن یه چیزیں واضع نهیں کرتیں که وه اصل میں هے کون۔ کلامِ مقدس همیں بتاتا هے که یسوع مسیح مجسم خدا هے، خدا انسان بنا ﴿دیکھیں یوحنا1باب1اور14آیت﴾۔ خدا زمین پر آیا همیں تعلیم دینے کے لیے، همیں شفا دینے کے لیے، همیں درست کرنے کے لیے، همیں معاف کرنے کے لیے اور همارے لیے مرنے کے لیے یسوع مسیح خدا هے، پیدا کرنے والا هے، بادشاهوں کا بادشاه هے ۔ کیا آپ اس یسوع کو قبول کرتے هیں؟

ایک نجات دهنده کیا هے اور همیں ایک نجات دهنده کی کیو ں ضرورت هے؟ کلامِ مقدس همیں بتاتا هے که هم سب نے گناه کیا، هم سب نے بُرے اعمال کیے ﴿رومیوں3باب10تا18آیت﴾۔ همارے گناه کا نتیجه هے که هم خدا کے غضب اور عدالت کے لائق هیں۔ بالکل اسی طرح لامحدوداور ابدی خدا کے خلاف کیے هوئے گناه کی سزا همیشه کی سزا هے ﴿رومیوں6باب23آیت؛ مکاشفه 20باب11تا15آیت﴾۔ اس لیے همیں ایک نجات دهنده کی ضرورت هے

یسوع مسیح دنیا میں آیا اور هماری جگه مُوا۔ یسوع کی موت ، انسانی جامه میں خدا، همارے گناهوں کی بے انتها قیمت تھی ﴿2۔کرنتھیوں 5باب21آیت﴾۔ یسوع نے مر کر همارے گناهوں کا کفاره ادا کیا ﴿رومیوں5باب8آیت﴾۔ یسوع نے وه قیمت ادا کی جو هم ادا نهیں کر سکتے۔ یسوع کا مردوں میں سے جی اُٹھا ثابت کرتا که همارے گناهوں کی پاداش میں اس کی موت هی کافی تھی۔ اس وجه سے یسوع ایک اور صرف ایک هی نجات دهنده هے ﴿یوحنا 14باب6آیت؛ اعمال4باب12آیت﴾ کیا آ پ یسوع کو اپنا نجات دهند تسلیم کرتے هیں؟

کیا یسوع آپ کا "شخصی "نجات دهند هے ؟ بهت سارے لوگوں کا خیال هے که گرجا گھر میں جانا، رسموں کا ادا کرنا، یقینی گناهوں کو نه کرنا مسیحیت هے۔ یه مسیحیت نهیں۔ یسوع مسیح کے ساتھ ذاتی تعلق سچی مسیحیت هے۔ یسوع مسیح کو اپنا شخصی نجات دهنده قبول کرنے کا مطلب هے که ذاتی طور پر اس اپنا ایمان اور یقین رکھنا۔ کسی اور پر ایمان رکھنے هم نجات نهیں پا سکتے۔ اچھے کاموں کی وجه سے کسی کو معافی نهیں مل سکتی۔ نجات کا حاصل کرنے کا صرف یهی ایک طریقه هے که یسوع کو اپنا شخصی نجات دهنده قبول کیا جائے، اس کی موت پر یقین رکھیں که اس نے همارے گناهوں کی قیمت ادا کر دی هے، اور اس کا مردوں میں سے جی اُٹھا آپ کی ابدی زندگی کی ضمانت هے ﴿یوحنا 3باب16آیت﴾۔ کیا یسوع آپ کا شخصی نجات دهنده هے؟

اگر آپ یسوع کو اپنا شخصی نجات دهنده قبول کرنا چاهتے هیں ، ذیل میں دئے گئے الفاظ خدا سے کهیں ۔ یاد رکھیں ، اس دعا کو پڑھنے یا کسی اور دعا کو پڑھنے سے آپ کو نجات نهیں مل سکتی۔ صرف مسیح پر ایمان لائے وه آپکو آپکے گناهوں سے نجات دے سکتا هے۔ یه دعا ساده سا ایک رسته هے خدا سے اظهار کرنے کا که تمهارا ایمان اس پر هے اور اس کا شکریه ادا کریں که اس نے آپکو نجات بخشی۔ "خداوند"، میں جانتا هوں که میں نے تیرے خلاف گناه کیا اور میں سزا کا مستحق هوں۔ لیکن جس سزا کا میں مستحق تھا یسوع مسیح نے وه سزا اپنے اوپر لے لی پس اس پر ایمان لانے سے میںنے معافی پا لی هے۔ میں اپنے گناهوں سے کناره کشی اختیار کرتا هوں اور اپنا ایمان تجھ پر رکھتا هوں اپنی نجات کے لیے۔ میں شکریه ادا کرتا هوں آپکے حیرت انگیز فضل اور بخشش کا جو ابدی زندگی کا تحفه هے آمین"۔

اگر ایسا ہے، تو برائے مہربانی دبائیں "آج میں نے مسیح کو قبول کرلیا"نیچے دئیے گئے بٹن کو



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



يسوع كو اپنا شخصي نجات دهنده قبول كرنے كا كيا مطلب هے؟