میں کس طرح اپنی نجات کا یقین کر سکتا ہوں ؟




سوال: میں کس طرح اپنی نجات کا یقین کر سکتا ہوں ؟

جواب:
یوحنا5 باب 11سے لیکرI اگر آپ نجات یافتہ ہیں تو یقین دہانی کے لیے کس طرح جان سکتے ہیں ؟ 13 آیت پر غور کریں "اور وُہ گواہی یہ ہے کہ خُدا نے ہمیں ہمیشہ کی زندگی بخشی اور یہ زندگی اُس کے بیٹے میں ہے، جس کے پاس بیٹا ہے اُسکے پاس زندگی ہے اور جس کے پاس خُدا کا بیٹا نہیں اُس کے پاس زندگی بھی نہیں " وُہ کون ہے جس کے پاس بیٹا ہے؟ یہ وُہ ہیں جو اُس میں ایمان رکھتے ہیں اور اُسے قبول کرتے ہیں۔ (یوحنا 1:12) اگر آپ کے پاس مسیح ہے تو آپ کے پاس زندگی ہے عارضی زندگی نہیں بلکہ ہمیشہ کی زندگی ۔

خُدا ہم سے ہماری نجات کی یقین دہانی چاہتا ہے ۔ ہم اپنی مسیحی زندگیا حیران ہوتے ہوئے اور پریشان ہوتے ہوے نہیں گزار سکتے ہیں چاہیے ہم نے سچی نجات پائں ہے یا نہیں ۔ اِس وجہ سے بائیبل نہیایت واضع نجات کا منصوبہ بتاتی ہے ۔ یسوع مسیح میں ایمان رکھو آپ نجات پاجاءو گے (یوحنا 3:16، اعمال 16:31) کیا آپ ایمان رکھتے ہیں کہ یسوع نجات دہیندہ ہے، کہ وہ ہمارے گناہوں کا کفارہ ادا کرنے کے لیے موا ؟ (رومیوں 5:8 کرنتھیوں5:12) کیا آپ نجات کے لیے اُس اکیلے پر بھروسہ کرتے ہیں؟ اگر آپ کا جواب ہاں میں ہے تو آپ نجات یافتہ ہیں! یقین کا مطلب ہے تمام شکوک سے پرے رہینا) خُدا کا کلام دل سے قبل کرنے سے آپ ان شکوک کو پرے پھینک سکتے ہیں او یہی آپ ہمیشہ کی نجات کی حقیقیت اور اصیلیت ہے۔

یسوع بذاتِ خود ان کے بارے میں باضابطہ اعلان کرتا ہے جو اُس میں ایمان رکھتے ہیں۔ " اور میں انہیں ہمیشہ کی زندگی بخشتا ہوں اور وہ ابد تک کبھی ہلاک نہ ہونگی اور کوئں انہیں میرے ہاتھ سے چھین نہ لے گا۔میں اور باپ ایک ہیں ۔ (یوحنا 28-29: 10) ہمیشہ کی زنگی صرف ہمیشہ کی زندگی ہے ۔ ہمارے یقین کی بنیاد یسوع مسیح کے وسیلہ سے خُدا کی محبت پر ہے۔



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



میں کس طرح اپنی نجات کا یقین کر سکتا ہوں ؟