روح القدس کون ہے؟



سوال: روح القدس کون ہے؟

جواب:
روح القدس کی پہچان کو لے کر کئی ایک غلط تصورات پائےجاتےہیں۔ کچھ لوگ روح القدس کو ایک چھپا ہوا یعنی مخفی قوت بطور نظر کرتے ہیں۔ دوسرے لوگ سمجھتے ہیں کہ روح القدس ایک غیر شخصی قوت ہے جو جس کو خدا مسیح کے ایماندروں کے لئے دستیاب کراتاہے۔ سو ہم دیکھیں روح القدس پہچان کی بابت پاک کلام کیا کہتاہے؟ سیدھے سادھے طور سےدیکھیں کہ پاک کلام اعلان کرتاہے کہ روح القدس خدا ہے۔ پاک کلام ہم سے یہ بھی کہتاہے کہ روح القدس ایک الہی شخص ہے جس میں ایک عقل ہے، احساس اور ایک مرضی ہے۔

حقیقت تو یہ ہے کہ روح القدس کو خدا بطور کئی ایک پاک کلام کی عبارتوں میں صاف طور سے دیکھا جاسکتا ہے جن میں اعمال کی کتاب 4-3 :5 بھی شامل ہے۔ ان آیتوں میں پطرس حننیاہ کا سامناکرکے کہتاہے کہ اس نے روح القدس سے کیوں جھوٹ بولا اور یہ کہ اس نے انسان سے نہیں بلکہ خدا سے جھوٹ بولا تھا۔ تو پھر یہ صاف اعلان ہے کہ روح القدس سے جھوٹ بولنا مانو خدا سے جھوٹ بولنا ہوا۔ ہم یہ بھی معلوم کر سکتے ہیں کہ روح القدس اس لئے خدا ہے کیونکہ اس میں خدا کے اوصاف پائےجاتے ہیں۔ مثال کے طور پراس کی ہمہ جائی یعنی کہ ہر جگہ حاضر رہنا یا موجود رہنا زبور شریف 8-7: 139 میں پایا جاتا ہے۔ زبور نویس داؤد کہتا ہے کہ "میں تیری روح سے بچ کر کہاں جاؤں یا تیری حضوری سے کدھر بھاگوں؟ اگر آسمان پر چڑھ جاؤں تو تو وہاں ہے۔ اگر میں پاتال میں بستر بچھاؤں تو دیکھ تو وہا بھی ہے"۔ پھر 1 کرنتھیوں 11-10 :2 میں ہم روح القدس میں خدا کی "معرفت کُل" کے اوصاف کو دیکھتے ہیں۔ اس میں پولس رسول اس طرح کہتا ہے "لیکن ہم پر خدا نے ان کو روح کے وسیلہ سے ظاہر کیا کیونکہ روح سب باتیں بلکہ خداکی تہہ کی باتیں بھی دریافت کر لیتا ہے۔ کیونکہ انسانوں میں سے کون کسی انسان کی باتیں جانتاہے سو انسان کی اپنی روح کے جواس میں ہے؟ اسی طرح خدا کے روح کے سوا کوئی خدا کی باتیں نہیں جانتا"۔

ہم جان سکتے ہیں کہ روح القدس حقیقت میں ایک الہی شخص ہے کیونکہ وہ ایک عقل رکھتاہے، احساسات اور ایک مرضی رکھتا ہے۔ روح القدس جانتاہے اور سوچتاہے (1 کرنتھیوں 2:10)۔ روح القدس رنجیدہ ہو سکتا ہے (افسیوں 4:30)۔ روح القدس ہمارے لئے شفاعت کرتاہے (رومیوں 27-26 :8) ۔ روح القدس اپنی مرضی کے مطابق فیصلہ لیتا ہے (1 کرنتھیوں 11-7 :12)۔ روح القدس خدا ہے، تثیلث کا تیسرا شخص۔ خدا ہونے کی حیثیت سے روح القدس سچ مچ مددگار اور صلاح کار بطور ادا کاری نبھا سکتا ہے۔ کہ یسوع نے وعدہ کیا کہ وہ ایسا کرے گا۔ (یوحنا 15:26، 26، 16 :14)۔



اردو ہوم پیج میں واپسی



روح القدس کون ہے؟