کیا یسوع جمعہ کے روز مصلوب ہوا تھا؟




سوال: کیا یسوع جمعہ کے روز مصلوب ہوا تھا؟ اگر ایسا ہے ، تو کیسے اُس نے تین دن قبر میں گزار اگر وہ اتوار کے دن مُردوں میں سے جی اُٹھا تھا؟

جواب:
بائبل تفصیل وار یہ بیان نہیں کر تی کہ ہفتہ کےکس روز یسوع مصلو ب ہوا تھا ۔ دو وسیع طور پر نظریات جمعہ اور بدھ کے روز ہیں ۔ کچھ ، بہر حال ، دونوں جمعہ اور بدھ کی آمیزش کو استعمال کر تے ہوئے دلائل پیش کر تے ہیں ، جمعرات کو دن کے طور پر ثابت کر تے ہوئے ۔

یسوع نے متی 12 : 40 میں کہا ، " کیونکہ جیسے یوناہ تین رات مچھلی کے پیٹ میں رہا ویسے ہی ابنِ آدم تین رات دن زمین کے اندر رے گا۔ " وہ جو جمعہ کے روز مصلوب ہونے کی دلیل پیش کر تے ہیں کہتے ہیں کہ یہاں اب بھی موزوں طریقہ ہے جس میں اُسے تین دن کے لیے قبر میں قیاس کیا جا سکتا تھا ۔ پہلی صدی کے یہودی ذہن میں ، دن کے حصے کو پورے دن کے طور پر قیاس کیا جاتا تھا ۔ جبکہ یسوع جمعہ کے حصہ کے لہے قبر میں تھا ، پورا ہفتے کا روز ، اور اتوار کے دن کا حصہ ۔ اُسے تین دنوں کے لیے قبر میں ہونے کے لیے قیاس کیا جا سکتا تھا ۔ جمعہ کے روز کے لیے ایک اصولی دلیل کو مرقس 15 : 42 میں پایا گیا ہے ، جو نوٹ کرتی ہے کہ یسوع " سبت سے ایک دن پہلے " مصلوب کیا گیا تھا ۔اگر یہ ہفتہ وار سبت تھا ، جیسے کہ ، ہفتے کا دن ، پھر یہ حقیقت جمعہ کی مصلوبیت کی طرف راہنمائی کر تی ہے ۔ جمعہ کے لیے ایک اور دلیل کہتی ہے کہ یہ آیات جیسے کہ متی 16 :21 اور لوقا 9 : 22 سکھاتی ہیں کہ یسوع تیسرے دن جی اُٹھے گا ، اِسی لیے اُسے مکمل تین دن اور رات قبر میں ہونے کی ضرورت نہیں تھی ۔ لیکن جبکہ کچھ ترجمے اِن آیات کے لیے "تیسرے دن " کو استعمال کر تی ہیں ، سب ایسا نہیں کر تے اور ہر ایک اِس کے ساتھ متفق نہیں کہ " تیسرے دن پر"اِن آیات کا ترجمہ کرنے کے لیے بہترین طریقہ ہے ۔ مزید براں ، مرقس 8 : 13 کہتی ہے کہ یسوع تین دن " بعد" جی اُٹھے گا ۔

جمعرات کا دن جمعہ کے نظریہ تک پھیلتا ہے اور دلیل پیش کرتا ہے کہ یہاں مسیح کے دفن کیے جانے اور اتوار کی صبح کے دوران بہت سے واقیات رونما ہو رہے ہیں جمعہ کی شام سے اتوار کی صبح تک رونما ہوتے ہیں ۔ جمعرات کے نظریہ کے محرک اشارہ کرتے ہیں کہ یہ خاص طور پر مسئلہ ہے جب جمعہ اور اتوار کے دن کے درمیا ن ایک مکمل دن ہفتہ، یہودی سبت تھا ۔ اضافی ایک یا دو دن اِس مسئلہ کو خارج کرتے ہیں ۔ جمعرات وجہ کی اس طرح طرفداری کر سکتی ہے : فرض کیجیے آپ نے اپنے دوست کو سوموار کی شام تک نہیں دیکھا ۔ اگلی مرتبہ آپ اُسے جمعرات کی صبح دیکھتے ہیں اور آپ کہتے ہیں ، " میں نے آپ کو تین دن سے نہیں دیکھا " اگرچہ اِسے اصطلاحی طور پر 60 گھنٹے ( 2۔5 دن ) ہونے تھے ۔ اگر یسوع جمعرات کے دن مصلوب ہوا تھا ، یہ مثال دکھاتی ہے کہ کیسے اِسے تین دن قیاس کیا جا سکتا تھا ۔

بُدھ کا خیال بیان کرتا ہے یہاں اِس ہفتہ میں دو سبت تھے ۔ پہلے کے بعد ( ایک جو مصلوب کیے جانے کی شام رونما ہوا ( مرقس 15 : 42 ، لوقا 23 : 52 ۔54 ) عورتوں نے عطر خریدے ، نوٹ کیجیے اُنہوں نے سبت کے بعد اپنی خریداری کی ( مرقس 16 : 1 )۔ بدھ کا نظریہ یہ پکڑے رہتا ہے کہ یہ " سبت " فسح تھی ( دیکھیے احبار 16 : 29 ۔ 31 ، 23 : 24 ۔ 32 ، 39 ، جہاں مقدس ایام جو ضروری طور پر ہفتے کا ساتواں دن نہیں ہیں سبت کے طور پر حوالہ پیش کر تے ہیں )۔ اُس ہفتے کا دوسرا سبت عموماً ہفتہ کا سبت تھا ۔ نوٹ کیجیے کہ لوقا 23 : 56 متی میں ، عورتیں جنہوں نے پہلے سبت کے بعد خوشبو دار چیزیں خریدیں واپس آئیں اور عطر تیار کیا ، پھر "" سبت پر آرام کیا " ( لوقا 23 : 56 ) ۔ دلائل بیان کر تے ہیں کہ وہ سبت کے بعد خوشبو دار چیزیں نہیں خرید سکتی تھیں ۔ دو سبتوں کے نظریہ کے ساتھ ، اگر مسیح جمعرات کو مصلوب ہوا تھا ، پھر مقدس سبت ( فسح) کو جمعرات پر سورج غروب ہونے سے شروع ہونا اور جمعہ کے روز سورج غروب ہونے ہے ساتھ ختم ہونا تھا ۔ ہفتہ وار سبت یا ہفتہ کےدن کے آغاز پر ۔ پہلے سبت کے بعد خوشبودار چیزیں خریدنا کا یہ مطلب ہونا تھا کہ اُنہوں نے اِنہیں ہفتہ کے روز خریدا اور سبت کو توڑ رہی تھیں ۔

اِسی لیے ، بدھ کے نقطہ نظر کے مطابق ،صرف وضاحت جو عورت کے لیے بائبل کی سرگشت اور خوشبو دار چیزوں اور متی 12 : 40 کی لغوی سمجھ کو پکڑے ہوئے اِسے بے حُرمت نہیں کرتی ، یہ کہ مسیح بدھ کے روز مصلوب کیا گیا تھا ۔ سبت جو کہ بہت پاک دن ( فسح) تھا جمعرات کو رونما ہو ا ، عورتوں نے() اِس کے بعد) جمعہ کے روز خوشبودار چیزیں خریدیں اور لوٹیں اور اُسی دن اُن خوشودار چیزوں کو تیار کیا ، اُنہوں نے ہفتہ کے روز آرام کیا جو کہ ہفتہ وار سبت تھا ، پھر اتوار کی الصبح خوشبودار چیزوں کو قبر پر لائیں ۔ یسوع بدھ پر غروب آفتاب پر پیدا ہوا ، جو یہودی کیلنڈر میں جمعرات سے شرو ع ہوا ۔ یہودی کیلنڈر کو استعمال کر تے ہوئے ، آپ کے پاس جمعرات کی رات ( پہلی رات ) ، جمعرات کا دن ( پہلا دن ) ، جمعہ کی رات ( دوسری رات ) ، جمعہ کا دن ( دوسرا دن ) ، ہفتہ کی رات ( تیسری رات) ، ہفتہ کا دن ( تیسرا دن ) ہے ۔ ہم درست طور پر نہیں جانتے جب وہ جی اُٹھا ، لیکن ہم یہ جانتے ہیں کہ یہ اتوار کو طلوع آفتا ب سے پہلے تھا ( یوحنا 20: 1 ، مریم مگدلینی آئی" جبکہ ابھی اندھیدا ہی تھا ")، اِس طرح وہ ہفتہ کی شام سورج غروب ہونے کے بعد الصبح جی اُٹھ سکتا تھا ، جو یہودیوں کے لیے شروع ہونے والا ہفتہ کا پہلا دن تھا ۔

بدھ کے دن کے ساتھ ایک ممکن مسئلہ یہ ہے کہ شاگردوں نے جو یسوع کے ساتھ اماوس کی سڑک پر پیدل چلے اُنہوں نے اُس کی قیامت ( جی اُٹھنے) کے" بالکل اُسی دن" ایسا کیا( لوقا 24: 13) ۔ شاگرد ، جنہوں نے یسوع کو نہ پہچانا ، اُسے یسوع کے مصلوب ہونے کے بارے بتایا (24 : 21) اور کہا کہ اِن چیزوں کو رونما ہوئے آج تیسرا دن ہو گیا ہے "( 24 : 22 )۔ بدھ سے اتوار چار دن ہیں۔ ممکنہ وضاحت یہ ہے کہ وہ بدھ کی شام یسوع کے دفنائے جانے سے شمار کرتے رہے تھے ، جو یہودی جمعرات سے شروع ہوتا ہے ، اور جمعرات سے اتوار تک کو تین دنوں کے طور پر شمار کیا جا سکتا تھا ۔

چیزوں کی تجویز میں ، یہ سب سے اہم نہیں کہ ہفتہ کے کس روز مسیح مصلوب کیا گیا تھا ۔ اگر یہ بہت اہم تھا ، پھر خدا کے کلام کو واضح طور پر دن اور اوقاتِ کار میں ربط پیدا کرنا تھا ۔ جو اہم ہے وہ یہ کہ وہ مرا اور کہ وہ مادی طور پر بدنی طور پر مُردوں میں سے جی اُٹھا ۔ جو کہ اِس سبب کے مساوی ہے کہ وہ مرا ۔ سزا حاصل کی جس کی تمام گناہگار مستحق تھے ۔ یوحنا 3 : 16 اور 3 : 36 دونوں دعویٰ کر تی ہیں کہ اپنا بھروسہ اُس پر رکھنے کا نتیجہ ابدی زندگی ہے ! یہ مساوی طور پر سچ ہے خواہ وہ بدھ کے روز مصلوب کیا گیا تھا ، جمعرات ، یا جمعہ کو ۔



واپس اردو زبان کے پہلے صفحے پر



کیا یسوع جمعہ کے روز مصلوب ہوا تھا؟ اگر ایسا ہے ، تو کیسے اُس نے تین دن قبر میں گزار اگر وہ اتوار کے دن مُردوں میں سے جی اُٹھا تھا ؟